1

“پیوستہ رہ شجر سے امید بہار رکھ”

تحریر : فضل وہاب

میں اپنے تمام دوستوں سے دل کے گہرایوں سے درخواست کرتا ہوں کہ اپنے آپ کو اسلامی تحریکوں سے وابستہ کریں .اسلامی تحریکوں کے پشتیبان بَنے.دنیا کی زندگی دو دن کی زندگی ہے .آج ہم جو کچھ کر ر ہے ہیں کل ہمیں ایک ایک چیز کا حساب دینا ہے .آج ہم جس کے ساتھ کھڑ ے ہے کل ہمیں ان کے ساتھ اٹھنا ہوگا .
یوم ند عو کلّ انا س با ما مہم
قیامت کے دن ہر بندے کو اس کے امام کے ساتھ بلایا جائیگا .
ایک امام تو وہ ہے جو مسجد میں ہمارا امام ہے وہ ہمارے لے امامت صغرا ی ہے لیکن حقیقی امام وہ ہے جس کے پیچھے ہم اس دنیا میں کھڑ ے ہو .جس کو ہم کسی علا قے کا ,کسی ضلعے کا ,کسی صوبے کا یا کسی ملک کا مالک بناتے ہو.وہا ں کے خزانو ں کے چابیاں اور امانتیں ان کے سپرد کرتے ہو , وہ جس نظریے سوچ اور فکر پر کھڑ ے ہو وہ نظریات وہ افکار اور فرامین وہی آپ کے اور ہمارے لئے بحیثیت امام ہیں .
علاقا یئ اور قومیت کے نام پر جو بت بنے ہوے ہے ان بتوں کو نبی اکرم ﷺ نے آج سے سا ڑ ھے چودہ سو سال پہلے پاش پاش کیے تھے .آج وہی بت پرانے شراب نئے بوتل کے بمصداق ہمیں گمراہ کرنے کے لئے موجود ہے .خدا را ہوش کے ناخن سنبھالے ان کے پیچھے مت کھڑ ے ہو جو دنیا اور آخرت میں تباہی اور رسوائی کا ذریعہ بنے .
اپنے اخلاقی ,ذہنی اور جسمانی طاقتیں ا علا ئے کلمتہ الله کے لئے استعمال کریں .معروفات کے فروغ میں اور منکرات کا قلع قمہ کرنے میں استعمال کریں .
آج ہم جو کچھ کر ر ہے ہیں ایک ایک فعل اور عمل کا کل ہم نے رب کے حضور حساب دینا ہیں .تو برا ئے مہربانی آیے آج سے اپنا خد احتسابی شورع کرتے کہ ہم کہاں کھڑ ے ہیں .ہماری وہ تمام طاقتیں اور صلاحیتیں جو الله نے امانت کے طور پر ہمارے تصرف اور اختیار میں دی ہیں کہیں وہ تو ہم رب سے بغاوت اور نافرمانی میں استعمال تو نہیں کر ر ہے ہیں .کہیں انجانے میں ایسے راہ کے راہی تو نہیں جو صراط مستقیم سے دور کرنے والی ہوں .
الله رب العزت نے ہمیں بیش بہا صلاحیتوں سے نوازا ہے .سوچ و فکر کی صلاحیتیں دی ہیں ,فہم و فراست ,بصیرت و بصارت کے نعمتوں سے مالا ما ل کیا ہیں .لہذا ان نعمتوں کو برو ئے کار لاتے ہوے دل و دماغ کے دنیا کو ٹٹول کر اندر کے انسان کو بیدار کریں .اور اشرا ح صدر کے ساتھ ایقان و یقین اور دل کی طمانیت کے جذبات سے سر شار ہو کر وہ فیصلہ کریں جو دنیا میں سر خرو ئی اور آخرت کے نجات کا ذر یعہ ثابت ہو .

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں