1

“کیا تم بھی “

“کیا تم بھی”

کیا تم بھی قہقہوں کی خواہش میں
ہنستے ہنستے رو جاتے ہو ؟؟

کیا تم بھی اندھیرے مٹانے کو 
اپنے دل کو اکثر جلاتے ہو ؟؟؟

کیا تم بھی منزلوں کی چاہ میں
چلتے چلتے رستہ بھول جاتے ہو ؟؟

کیا تم بهی خود کو تلاشنے کی خاطر
کچھ لمحے تنہا بتاتے ہو ؟؟؟

کیا تم بھی درد مٹانے کی خواہش میں
درد کی آخری حد تک جاتے ہو ؟؟؟

کیا تم بھی کچھ بھولنے کی کوشش میں
یادوں کے دریچوں سے لوٹ جاتے ہو ؟؟؟

کیا تم بھی کسی کے حال پوچھ لینے پر
پلکیں تیز تیز چھپکاتے ہو ؟؟؟

کیا تم بھی آنکھوں میں نمی لیے اسریٰ
اکثر محفلوں میں مسکراتے ہو ؟؟

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں