اخلاق – انعم حسین




حیا: اخلاق کیا ہے؟؟؟عائشہ : کیا تمہیں نہیں معلوم حیا؟؟حیا: نہیں۔۔۔کیا ہوتا ہے اخلاق ؟؟عائشہ: حیا انسان اپنے اخلاق ہی کی وجہ سے تو پہچانا جاتا ہے۔ اچھا اخلاق ایک انسان کے اندر ہونا بہت ضروری ہے۔ اچھے اخلاق سے مراد اپنے گھر والوں کے ساتھ اچھے سے پیش آنا چاہیے کسی کے ساتھ بد اخلاقی کا مظاہرہ نہیں کرنا چاہیے۔

مثلاً: جب گھر میں امی ہمیں کچھ کام کرنے کا کہتی ہیں اور ہم بہت تھکے ہوئے ہوتے ہیں۔۔تو ہم غصے میں انہیں کچھ بھی کہہ دیتے ہیں کہ ابھی کولج سے تھکی ہوئی آئی ہوں اور کام۔۔۔اسی طرح ہم اپنے بہن بھائیوں اور باقی سب سے بھی بد اخلاقی سے پیش آتے ہیں”جبکہ اللہ تعالی نے والدین کا بہت بڑا درجہ رکھا ہے اور انہیں “اف” تک نہ کہنے کا حکم دیا ہے”۔حیا: ہاں ہاں عائشہ مجھے تو بہت غصہ آتا ہے میں تو کسی کو بھی کچھ بھی بول دیتی ہوں۔عائشہ: انہیں باتوں پر ہمیں غصہ نہیں کرنا چاہئے اگر ہم تھکے ہوئے ہیں تو انہیں پیار سے کہہ دیں لیکن نہیں ہم تو فوراً ہی غصہ ہو جاتے ہیں جو منہ میں آئے بول دیتے ہیں۔ ہمارے اسی برے اخلاق کی وجہ سے لوگ ہم سے دور ہوجاتے ہیں ہم سے بات کرنا پسند نہیں کرتے اور ہمارے برے اخلاق کی وجہ سے اللہ بھی ہم سے ناراض ہوتا ہے۔ ہمیں کسی کے ساتھ برے اخلاق سے پیش نہیں آنا چاہیے اللہ تعالی سے یہ دعا کرنی چاہئے:”اَللّٰھُمَّہ اِنِیْ اٌَعُوْذُ بِْکَ مِنَ الشِقَاقِ وَالنِفَاقِ وَسُوْیِ االاَْخْلاَقِ”(ترجمہ:اے اللہ! میں عداوت ومخالفت، منافقت اور اخلاق بد سے پناہ چاہتا ہوں)۔

حیا: عائشہ تم صحیح کہہ رہی ہو ہمیں اپنے گھر والوں کے ساتھ ،اپنے دوستوں کے ساتھ اور باقی سب کے ساتھ بھی اچھا اخلاق رکھنا چاہیے۔جزاک اللہ عائشہ مجھے سمجھانے کےلیے میں اب اپنے گھر والوں کے ساتھ اچھے اخلاق سے پیش آوں گی۔  عائشہ: ان شاءاللہ حیا مجھے تم سے یہی امید ہے کہ تم میری یہ بات یاد رکھوگی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں