212

” IAmSorry ” عارف انیس

‘میں آپ سب سے معافی مانگتی ہوں کہ آپ کا نیوزی لینڈ میں تحفظ نہ کر سکی. میں آپ کی قصوروار ہوں’…. سیاہ لباس اور سر پر دوپٹہ پہنے یہ نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جاسنڈا آرڈن ہے اور وہ مسلم کمیونٹی سے تعزیت اور اپنے شہریوں کو تحفظ نہ دے سکنے پر معزرت کرنے کے لیے مسلمانوں کے درمیان موجود ہے.

نیوزی لینڈ، ریاست مدینہ تو نہ سہی، مگر اس نے اپنی زمہ داری تو قبول کی ہے. یہاں تو سانحہ ساہیوال کے متاثرین ابھی تک پتھرائی ہوئی آنکھوں سے آسمان تک رہے ہیں.

اڑتیس سالہ دھان پان سی وزیراعظم نے اپنی زندگی کے سب سے بڑے بحران میں لیڈرشپ اور استقامت کا ثبوت دیا ہے. کل اس نے بغیر کوئی لفظ چبائے برینٹن کو دہشت گرد قرار دیا اور شدت پسندی اور گن قوانین کے خلاف بڑے ایکشن کا عندیہ بھی دیا.

دیکھنا یہ ہے کہ دوسری مغربی حکومتیں سفید فام برتری والی دہشت گردی سے نپٹنے کے لیے کیا کرتی ہیں. اب یہ مغرب کے ضمیر کا امتحان ہے جس نے آج تک انگلی دوسروں کی طرف اٹھائی ہوئی تھی.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

Leave a Reply