نعمت کی موجودگی – بنت شیروانی




نادیہ بستر پر سونے کے لۓ لیٹی ہی تھی کہ اس نے اپنی بڑی بیٹی کو آواز لگائی اور کہا سعدیہ ذرا سالن کی پتیلی کو باورچی خانہ سے اُٹھا کر کمرے میں پنکھے کے سامنے رکھ دو اور ہاں ساتھ میں گڑیا کی antibiotic بھی رکھ دینا۰
ایک تو آج کل دواؤں کی قیمتیں بھی آسمان سے باتیں کرنے لگی ہیں……… یہ سُن کر سعدیہ نے پتیلی اور دوا اٹھائ اور کہا اماں یہ تو بتائیں آج کل کیا چیز سستی ہے ؟یہ سُن کر نادیہ کا بیٹا بول اٹھا “انسانی جان کی قیمت”جسے سُن کر نادیہ نے اثبات میں سر ہلایا۰ اگلے دن صبح بجتے ہوۓ الارم سے نادیہ کے ہر بڑا کر اٹھنے پر قریب سوۓ بچے بھی جاگ اٹھے اور پوچھنے لگے اماں کیا ہوگیا خیریت تو ہے جس پر نادیہ نے کہا جلدی سے رات کا بچا سالن اوردودھ گرم کرنے کو رکھ دوں ایسا نہ ہو گرمی میں خراب نہ ہوجاۓ جس پر بچوں نے سکھ کا سانس لیا کہ خدانخواستہ کوئ ہریشانی کی بات نہیں تھی……. ابھی پھر تھوڑی ہی دیر گزری تھی کہ نادیہ اپنی بیٹی سے کہنے لگی کہ you tube پر سب سے اچھا کھانا پکانا کون سکھاتا ہے جس پر اُس کی بیٹی حیران ہوئ کہ اماں آپ تو خود اتنا اچھا کھانا پکاتی ہیں آپ کو اس you tube سے کھانا پکانا کہاں سے سیکھنے لگیں ؟؟
جس پر نادیہ نے اپنا سر پکڑا اور اور کہا ارے کھانا پکانا کون سیکھ رہا ہے یہ خواتین ذرا measurement صحیح بتا دیتی ہیں میں پراٹھابنانے لگی تھی تو سوچا ایک پراٹھا بنانے کے لۓ کتنا آٹا درکار ہوگا وہ ذرا دیکھ لوں تاکہ گوندھا آٹا بچ کر ضایع نہ ہو۰رزق کو ضایع کرنے سے بڑا ڈر لگتا ہے اس رزق کی خاطر تو مرد صبح کے گۓ رات کو اپنے boss کی باتیں سُن کر آئیں اور خواتین اپنا وقت باورچی خانہ میں گزاریں ….اس کے بعد جب نادیہ کا بیٹا سبزی خریدنے جانے لگا تو نادیہ نے تاکیدا صرف دو سبزیاں لانے کو کہا وہ بھی آدھا کلو۰ہاں ایک عدد سبزی بھی زیادہ نہ ڈلوانا مبادا کہ وہ خراب ہو جائے …….اور جب خود سودا الف لینے لے لۓ بازار گئ تو ہاتھ پر یہ لکھ ڈالا کہ اچار ،مربے اور چٹنیاں نہیں خریدنی۰اور اب تو نادیہ نے اپنے گھر میں لگے گملوں میں ہرا دھنیا ،پودینہ بھی اگا ڈالا کہ وقت بے وقت آنے والے مہمان کو ہری چٹنی ہی پکوڑوں کے ساتھ بنا کر کھلا دے۰اب ہفتہ بھر ہی گزرا تھا کہ نادیہ کے بچوں نے آواز لگائ “آگیا آگیا”یہ آوازیں تو سُن کر نادیہ سجدہ میں ہی گر گئ اور ساتھ میں صدقہ بھی نکال ڈالا ۰
اب آپ سب یہ بتائیں کہ وہ کیا نعمت تھی کہ جس کے خراب ہونے پر نادیہ کے مسائل میں بے پناہ اضافہ ہوا؟ کہ جس نعمت کی موجودگی نادیہ کی بہت سی فکروں کو اپنے اندر سموۓ ہوۓ تھی۰صحیح جواب کی صورت میں آپ کا تحفہ ہوں گی۰

اپنا تبصرہ بھیجیں