بہت زیادہ شائع ہونے والی کتاب- عزیزہ انجم




عرف عام میں بیسٹ سیلر کتابوں میں سے ایک عموما کتابوں سے اور پرنٹ لٹریچر سے بے اعتنائی کا شکوہ کیا جاتا ہے اور تاثر یہی ہے کہ کتابیں اپنی اشاعت کی پہلی قسط بھی مکمل نہیں کر پاتیں ۔لیکن ایسا نہیں ہے ۔ کتاب اثر انگیز ہو تو اب بھی قبولیت عام پاتی ہے ۔ یہ احساس اس وقت شدید ہوا جب رمضان سے متعلق کتابیں ایک بار پھر نظر سے گزریں ۔

رمضان عجیب مہینہ ہے ۔اللہ سے قربت کا مہینہ ۔اپنے آپ سے ملاقات کا مہینہ۔ سحر کے پرسوز لمحوں میں کچی پکی نیند کو توڑ کر اٹھنا آسان نہیں لیکن رب کے پیارے بندے اٹھتے ہیں خوشی خوشی اٹھتے ہیں ۔بچوں کو نہ اٹھاؤ تو روتے ہیں ہمیں کیوں نہیں اٹھایا ۔سحری افطار کا فیملی ٹائم بھی رمضان عطا کرتا ہے ۔ استقبال رمضان دورہ قران خلاصہء قران ترجمہ قران ۔۔۔۔قران سے وابستگی کا مہینہ اور قران سے جڑی سرگرمیاں ۔ ایسے میں رمضان بہتر بنانے کے لئے بے شمار عنوانات پر کتابوں اور کتابچوں کی اشاعت اور تقسیم ۔رمضان اور قران رمضان اور خواتین رمضان نیکیوں کا موسم بہار ۔ان گنت عنوان اور پہلو ۔منشورات کا ادارہ ہر سال بے شمار کتابچے اس حوالے سے شائع کرتا ہے ۔ان میں سے ایک خرم مراد صاحب کی مختصر چند صفحوں پر مشتمل کتاب رمضان کیسے گزاریں ہے ۔

خرم مراد صاحب مصنف نہیں مربی تھے مزکی تھے ۔روایتی سیٹ اپ میں غیر روایتی آدمی تھے ۔ نظم اور تنظیم سے وابستہ تھے اہم ترین ذمہ دار تھے لیکن بات پریکٹیکل کرتے تھے عام آدمی کی کرتے تھے ۔خلوص اور سادگی اور ذہانت انکی ہر کتاب کو پڑھتے ہوئے محسوس ہوتی ہے ۔ رمضان کیسے گزاریں ہر سال ہر مرتبہ پڑھنے کا دل چاہتا ہے ۔آسان زبان میں چھوٹی چھوٹی tips ۔ ایک عام مصروف مرد اور خاتون کے لئے عمل کرنے کی ممکنہ باتیں ۔ یہ کتاب اب تک چودہ لاکھ کی تعداد میں شائع ہوئی ہے اور تقسیم ہوئی ہے ۔چودہ لاکھ لوگوں نے اسے پڑھا ہے ۔ اس سے روشنی لی ہے ۔رمضان کیسے گزاریں بیسٹ سیلر کتابوں میں سے ایک ہے ۔ خرم مراد صاحب نے کیا لکھا ہے یہ تو کتاب پڑھ کر ہی پتہ چلے گا لیکن دو تین باتیں ۔ پہلی بات نیت ارادہ کہ اس رمضان میں اللہ سے بتر تعلق بنانا ہے-

دوسرے یہ انکے اعدادوشمار ہیں کہ اگر قران کا ایک رکوع روزانہ ترجمے سے پڑھا جائے تو اگلے رمضان تک قران مکمل نظر سے گزر جائے گا ۔ تیسری بات جو دل کو چھو لیتی ہے وہ کہتے ہیں تہجد میں آٹھ رکعت پڑھنا اعزاز کی بات ہے لیکن اگر یہ ممکن نہیں تو بس اپنی پیشانی رب کے حضور زمین پر رکھ دیں اور اپنی عاجزی کا اپنی خطاؤں کا اعتراف کر لیں ۔
رمضان کیسے گزاریں پڑھے بغیر رمضان مت گزاریں –

اپنا تبصرہ بھیجیں