جامِ بے طلب از شفا ہما (ناول) – آخری باب – قسط نمبر 57

تھوڑی دیر بعد جب وہ لڑکی ریسیپشن کی طرف بڑھنے لگی تب وہ بہت بے قرار ہو کر اس کی طرف قدم قدم چلتا گیا تھا۔ ’’ایکسوزمی۔۔؟؟‘‘وہ اسکے قریب پہنچ کر نظریں جھکاتے ہوئے بولا تھا ’’جی۔۔آپ کون۔۔۔؟؟‘‘ اس لڑکی ..مزید پڑھیں

جامِ بے طلب از شفا ہما (ناول) – آخری باب – قسط نمبر 54

نرس ایکسکیوزمی—-؟؟؟؟اجیہ کی کمزور آواز دروازے کی طرف بڑھتی نرس کے کانوں سےٹکرائی تو وہ پلٹی، “جی اجیہ کوئی کام ہے؟”وہ واپس اجیہ کے بیڈ تک آگئ “اٹھنا چاہتی ہیں–مدد کروں؟؟؟؟نرس اجیہ پر جھکتے ہوئے آہستگی سے کہنے لگی، “نہیں——!”اجیہ ..مزید پڑھیں