سفاک اسرائیلی فوج کی فائرنگ، معصوم فلسطینی بچہ شہید –




 راملہ : مقبوضہ فلسطین میں ظالم اسرائیلی فوج نے وحشیانہ فائرنگ کرتے ہوئے نو عمر لڑکے کو زخمی کردیا جو اسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے شہید ہوگیا۔

اطلاعات کے مطابق مقبوضہ مغربی کنارے میں راملہ کے قریب اسرائیلی فورسز کی فائرنگ کے بعد کم عمر لڑکا علی ابو عالیہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے اسپتال میں چل بسا۔

فائرنگ سے شہید ہونے والے13 سالہ بچے کی نماز جنازہ اور تدفین کی گئی جس میں بڑی تعداد میں لوگ شریک ہوئے۔ واقعے کے مطابق اسرائیلی سکیورٹی فورسز اور فلسطینیوں کے درمیان جھڑپیں شروع ہوئیں اس دوران اسرائیلی فوج نے فائرنگ کرکے اس اس بچے کو مار ڈالا۔

الموگییر گاؤں میں سینکڑوں فلسطینی علی ابو عالیہ کی ہلاکت پر سوگ منانے جمع ہوئے اور ان کے اہل خانہ سے اظہار تعزیت بھی

کیا۔ مرکز اطلاعات فلسطین کے ریڈ کراس نے میڈیا کو بتایا کہ علی ابو عالیہ کے پیٹ میں گولی ماری گئی، جس کے بعد اسے مقامی اسپتال پہنچایا گیا، جہاں وہ دوران علاج زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا

دوسری جانب اقوام متحدہ کے بچوں کی صحت سے متعلق ایجنسی یونیسیف نے جمعہ کے روز علی ابو عالیہ کے قتل کے واقعے کی مذمت کی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق مشرق وسطی اور شمالی افریقہ کے علاقائی ڈائریکٹر ٹیڈ چیبان نے کہا کہ یونیسیف نے اسرائیلی حکام سے بین الاقوامی قانون کے مطابق تمام بچوں کے حقوق کی حفاظت کی جائے۔

14 years old child Ali Abu Alia was killed yesterday in Al Mughair village near Ramallah. Children enjoy special protection under international law. How many more Palestinian children will be subject to the excessive use of lethal force by the Israeli security forces? 1/2 pic.twitter.com/8RHbDQhhrz

— EU and Palestinians (@EUpalestinians) December 5, 2020

Comments

اپنا تبصرہ بھیجیں