کسان تحریک، ایک اور کسان نے جان دے دی –




نئی دہلی: بھارت میں کسان تحریک کے دوران ایک اور کسان نے جان دے دی۔

تفصیلات کے مطابق کسان تحریک کے دوران دہلی بارڈر پر ایک اور خود کشی کا واقعہ سامنے آ گیا، حصار کے کسان نے مودی سرکار کے ظالمانہ زرعی قوانین کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے جان دے دی۔

خود کشی کرنے والا کسان راج بیر زرعی قوانین کے خلاف دہلی کی سرحد پر جاری کسانوں کے احتجاج کا حصہ تھا، جہاں پنجاب، ہریانہ اور اتر پردیش کے ہزاروں کسان 100 سے زائد دنوں سے احتجاج کر رہے ہیں۔

رپورٹس کے مطابق ہریانہ کے 55 سالہ کسان نے اتوار کے روز ٹیکری بہادر گڑھ بارڈر پر خود کشی کی، پولیس کا کہنا ہے کہ متوفی شخص کی شناخت ضلع حصار کے راج بیر کے طور پر ہوئی ہے، جس نے ایک درخت پر پھانسی لگا کر جان دی۔

بھارت کسان تحریک، 100 دن میں کتنے کسان ہلاک ہوئے؟

دہلی بارڈر پر کسانوں کی خود کشی کے واقعات میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے، اس سے قبل بھی درجنوں کسان خود کشی کر چکے ہیں، لیکن مودی سرکار کسانوں کے مطالبات قبول کرنے کو تیار نہیں۔

کسان مودی حکومت سے تینوں زرعی قوانین واپس لینے کا مطالبہ کر رہے ہیں، ان کا یہ بھی مطالبہ ہے کہ حکومت ایم ایس پی پر قانونی ضمانت دے، لیکن حکومت کسانوں کے مطالبات کو سننے کے لیے تیار نہیں۔

حکومت کا کہنا ہے کہ وہ تینوں زرعی قوانین واپس نہیں لے گی، کاشت کاروں کا کہنا ہے کہ جب تک مطالبات نہیں مانے جاتے تب تک احتجاج جاری رہے گا۔

Comments

اپنا تبصرہ بھیجیں