پاکستانی وفد کا دورہ منسوخ، افغانستان کا معاملے کی تحقیقات کا حکم







پاکستانی پارلیمانی وفد کے دورہ افغانستان منسوخی کے معاملے کی افغان حکومت نے اعلیٰ سطح تحقیقات کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔

افغان اسپیکر میر رحمان رحمانی نے انکوائری کا حکم دے دیتے ہوئے کل  اعلیٰ حکام افغان کو پارلیمنٹ میں طلب کر لیا ہے۔وزیردفاع، داخلہ اور ہوا بازی   کو کل  افغان پارلیمنٹ بلا لیا گیا۔

افغان اسپیکر پاکستانی وفد کو لینڈنگ کی اجازت نہ دینے پر وضاحت مانگیں  گے،  پارلیمانی وفد کے جہاز کو گزشتہ روز کابل میں اترنے کی اجازت نہیں دی گئی۔افغان اسپیکر نے کہا کہ سازش کرنے والوں کو بے نقاب کرکے سزا دی جائے گی۔

اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی زیر صدارت افغانستان کے دورے پر جانے والے پارلیمانی وفد کے جہاز کو کابل ائر پورٹ پر لینڈنگ کی اجازت نہ ملنے کے باعث دورہ ملتوی کر دیا گیا۔اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر پارلیمانی وفد کے ہمراہ تین روزہ دورے کے لیے افغانستان روانہ ہوئے تھے، وفد میں نمائندہ خصوصی برائے افغانستان محمد صادق خان اور رکن پارلیمان غلام مصطفیٰ شاہ بھی شامل تھے۔

 اس کے علاوہ وفد میں ساجد خان، رانا تنویر، گل داد خان، شیخ یعقوب اور شاندانہ گلزار بھی شامل تھے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سیکورٹی وجوہات کی بنا پر کابل انٹرنیشنل ائرپورٹ بند ہے جس کے باعث پاکستانی وفد کو بھی دورہ ملتوی کرنا پڑا۔





اپنا تبصرہ بھیجیں