بیٹیاں جہنم کی آگ سے آڑ بنیں گی




حضرت عائشہؓ فرماتی ہیں کہ ایک عورت اپنی دو بیٹیوں کے ساتھ کچھ مانگنے کے لئے میرے پاس آئی۔ میرے پاس ایک کھجور کے علاوہ کچھ بھی نہیں تھا،جو میں نے اس عورت کو دے دی،

اس عورت نے وہ کھجور دونوں بیٹیوں کو تقسیم کردی اور خود نہیں کھائی۔ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم  کے تشریف لانے پر میں نے اس واقعہ کا ذکر فرمایا، تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم  نے ارشاد فرمایا: جس شخص کا بیٹیوں کی وجہ سے امتحان لیا جائے اور وہ ان کے ساتھ اچھا سلوک کرے تو یہ بیٹیاں اس کے لئے جہنم کی آگ سے آڑ بنیں گی ( بخاری،مسلم)۔* معلوم ہوا کہ تمام نبیوں کے سردار حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم  کی خواہش ہے کہ ہم اپنے مال ودولت کی ایک مقدار محتاج، غریب، مساکین اور یتیم وبیواؤں پر خرچ کریں۔عام قرض کا بیان:اب تک اُس قرض کا ذکر کیا گیا جس کو اللہ تعالیٰ نے قرآن کریم میں قرض حسن سے تعبیر کیا ہے جس سے مراد اللہ تعالیٰ کی رضا کے لئے اللہ کے بندوں کے مدد کرنا ہے۔

Name : Asra Ghauri . Education : M. A. Islamic Studies Writer, blogger. Editor of web www.noukeqalam.com Lives In Pakistan

اپنا تبصرہ بھیجیں