دورہ قرآن کی محفل اور ہم – صبا ناصر




نزول قرآن کا مہینہ قرآن سے قربت تعلق کا مہینہ ھے ۔ اور یہ تعلق گلی گلی میں سجی دورہ قرآن کی محفلوں میں خوب نظر آتا ھے ۔ ایسی ہی ایک محفل ڈائیوو ٹرمینل کے دامن میں آباد جماعت اسلامی حلقہ خواتین گجرو کے تحت کوئٹہ ٹاون میں سجائی گئی ۔ جہاں کے شرکت کی۔SOPsساتھ خواتین نے تمام تر

عشرہ دورہ قرآن میں سورہ فاتحہ، سورہ البقرہ اور سورہ کہف سے عمل کے موتی چننے والی خواتین آج دعا کے لئے تشریف لائی تھیں۔10رمضان المبارک رحمت کےعشرہ کا آخری دن، باب فتح کی یادیں لئے خواتین جوش خروش سے جمع ھوئیں پروگرام کے آغاز میں طالبہ ماہم نے سورہ البقرہ کےآخری رکوع کی بھت خوش الحانی سے تلاوت کی ۔ نعت رسول مقبول صلی اللہ علیہ وسلم ۔۔۔۔۔ میں اپنے نبی کے کوچے میں چلتا ہی گیا چلتا ہی گیا نے سماں باندھ دیااور سننے والی ہر آنکھ نم ہوگئی۔حرم فورم کی ٹرینر بہن صبا حسن نے سورہ البقرہ کے آخری رکوع کے عملی نکات رکھے۔ وہ کہ رہی تھیں کہ یہ عظیم آیات عرش کے خزانے سے عطا کی گئی ہیں۔ یہ تحفہ معراج ہیں۔ کائنات کا ہر ذرہ بشمول میری ذات کے اللہ کی ملکیت ہے۔ہر چیز پر اسی کا حکم نافذ ہے ۔رب سے تعلق تو ہے ہی اس تعلق کو دوستی اور محبت سے مضبوط کریں ۔ یہ سورہ دوا بھی ہے اور شفا بھی ۔باہر دھوپ بڑھتی جا رہی تھی لیکن شرکاء محفل قرآن کے سائے میں ہمہ تن گوش تھیں۔ اس کے بعد فرحانہ شہاب متعمدہ ضلع شمالی نے معاشرے کے سلگتےمسائل کا حل قرآن کریم کی صورت پیش کیا۔ وہ کہ رہی تھیں کہ کامیابی کا واحد راستہ اورسارے مسائل کا حل صرف قرآن ھے۔جسے گھر سے لے کر مقتدر اداروں تک عملی طور پر نافذ کرنا ہو گا۔

ریاست مدینہ تیرہ سال میں اسلامی نظام پر قائم ہو گئ لیکن ذرا سوچئے،آج ہم ستر سال بعد بھی مسائل میں جکڑے کہاں کھڑے ہیں؟ جب کہ قرآن عظیم کی دعوت نے عرب کو سپر پاور بنا دیا تھا۔آج بھی پسماندہ اقوام کے تمام مسائل کا حل قرآن میں ھے۔ قرآن دنیا، قبر اور حشر تک کا ساتھی ہے۔ اسے تھام لیجئے۔ دورہ قرآن سے فیضیاب ہونے والی خواتین نے بڑے جذبہ و لگن سےاپنے تاثرات اور عمل کے عزائم بتائے ۔محفل قرآن کی اس الوداعی نشست میں شرکت کر کے ہر دل اداس بھی تھا اور قرآن کو معمولات زندگی میں شامل کرنے کے لئے پر عزم بھی۔ عثمان پبلک اسکول سسٹم کی معلمہ طاہرہ نصرت کی پر سوز دعا میں فرشتے بھی شامل تھے اور سکینت نازل ہورہی تھی ۔ پمفلٹ ،کتب اور کھجور بکس کی تقسیم اورایک دوسرے کو دعاؤں میں یاد رکھنے کی درخواستوں کے ساتھ یہ محفل اختتام پذیر ہوا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں