وقف کرکےزندگی کی ساعتیں تیرے لئے – صائمہ عبد الواحد




سید منور حسن جماعت اسلامی کے چوتھے امیر، اپنے رب کے حضور حاضر ہو گئے ۔ اللہ تعالی ان کی بہترین مغفرت کرے اور انہیں جنت الفردوس میں اعلی مقام عطا کرے۔ آمین
جماعت اسلامی ایک خاندان کی طرح ہے ……. جماعت اسلامی میں اپنے قائدین اور رفقاء کو عزت اور احترام دیا جاتا ہے . انکی زندگی میں بھی اور ان کے اس دنیا سے رخصت ہو جانے کے بعد بھی ۔ منور حسن صاحب کو جس عزت و احترام کے ساتھ اس جہان فانی سے رخصت کیا گیا ، یہ ان کا حق بھی تھا کہ انہوں نے اپنی زندگی کے بہترین ساٹھ سال جماعت اسلامی کے لیے وقف کردیئے ۔ عائشہ منور صاحبہ نے بھی اپنا وقت اور صلاحیتیں جماعت اسلامی کے لیے وقف کر دیں ۔ لوگ دنیا کمانے کیلئے ملک سے دور رہتے ہیں ، گھر بار چھوڑ دیتے ہیں ، فیملی سے دور رہتے ہیں ……..
مگر منور صاحب اور عائشہ منور نے دین کی راہ میں جدوجہد کے لیے، اپنی آخرت کو سنوارنے کے لئے اور جماعت اسلامی کو تقویت پہنچانے کیلئے اپنی زندگی اپنی جوانی اپنا گھر بار ہر شے اس راہ میں وقف کر دی ۔ وقت اور صلاحیتیں اللہ تعالی کی دین ہیں یہ انسان کا اپنا اختیار ہے کہ وہ ان صلاحیتوں کس طرح استعمال کرتا ہے۔ بائیں بازو کی جماعت سے نکل کر جمعیت کا حصہ بن جانا اور پھر اس کے بعد جماعت میں شامل ہونا. یہ دراصل منور حسن صاحب پر اللہ تعالی کا بہت بڑا احسان تھا مگر اس احسان پر اللہ تعالی کا شکریہ ادا کرنا ….. یہ منور حسن صاحب کا اپنا اختیار تھا اور انہوں نے اپنا یہ اختیار استعمال کیا اور اپنی ساری زندگی اسی راہ میں لگا دی۔
میں اور آپ بھی اسی جماعت اسلامی کا حصہ ہیں ہم پر بھی یہ اللہ کا احسان ہے کہ اللہ تعالی نے ہمیں بھی بہت سوں پر فوقیت دی اور ہمیں اس جماعت کا حصہ بنایا ۔ منور حسن صاحب کی زندگی سے کچھ سبق لے کر ہم بھی ان کی طرح جماعت اسلامی کے لیے کارآمد فرد بن سکتے ہیں ۔ اپنا وقت اور صلاحیتیں اسی راہ میں لگا کراپنی دنیا اور آخرت سنوار سکتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں