مریم حسن – It's Okay to Not be Okay




السلام علیکم ورحمتہ اللہ …… ! آج کل میں ایک ڈرامہ دیکھ رہی ہوں . “It’s Okay to Not be Okay”. یہ پہلا کورین ڈرامہ ہے جسے میں نے فالو کیا ، ایک دن فیس بک پر اسکرالنگ کرتے ہوئے ایک دوست کی پوسٹ نظر سے گزری اور دل میں اترتی ہوئی محسوس ہوئی تھی ۔ اُس نے اسی ڈرامے کی پہلی قسط سے ایک سین پوسٹ کیا تھا ۔ سیدھے سے الفاظ تھے …… جو بہت بری طرح مضطرب کرگئے تھے۔
ڈرامے کی تھیم “انسانی نفسیات” ہے۔ اس میں ان بہت عام مسائل کو دکھایا گیا ہے جن کا شکار معاشرے میں اکثر افراد ہوتے ہیں شاید میں اور آپ بھی۔ ان مسائل کو اجاگر کرکے، کسی “سائیکو” کہلائے جانے والے انسان کے طرز عمل کے پیچھے چھپے محرکات دکھا کر بتایا گیا ہے کہ It’s Okay to be Psycho۔ اگر آپ اپنی زندگی میں سب کچھ صحیح نہیں کرپا رہے ہیں تو بھی ٹھیک ہے ، آپ اگر تھک گئے ہیں تو ٹھیک ہے ، اگر آپ کے مسائل آپ کی برداشت سے بڑھ گئے ہیں تو انہیں بانٹ لیں ، آپ ٹھیک نہیں ہیں تو کسی ایسے سے مدد لیں جو آپ کی مدد کرسکتا ہے اور یہی اس ڈرامے کی سب سے اچھی بات ہے۔ ہمارے ہاں نفسیاتی بیماریوں کے حوالے سے شعور نہ ہونے کے برابر ہے، دماغی مسائل کا علاج کروانے والے کو پاگل قرار دے کر مزید ذہنی اذیت دی جاتی ہے . ایسے میں یہ پیغام کہ آپ اپنی کمزوریوں کے لیے مدد لیں، بہت اہم ہے۔
ہم عام طور دیکھتے ہیں کہ کوئی شخص ، جس کے پاس بظاہر سب کچھ ہے لیکن وہ خوش نہیں تو ہم اسے ناشکرا قرار دے دیتے ہیں، اپنی طرف سے اس کا کافر نعمت ہونا ثابت کرکے اسے چھوڑ دیتے ہیں، کوئی اپنی زندگی میں کسی کے نہ ہونے پر تکلیف سہہ رہا ہے تو اسے بس ایک غلط عمل پر قصوروار ٹھہرا کر اکیلا کردیتے ہیں، ہمیں سمجھنا چاہیے کہ ہر انسان کی آزمائش الگ ہے، یہاں ہر کسی کو کسی الگ طریقے سے آزمایا جارہا ہے، آپ کے حصے میں وہ آزمائش نہیں آئی جو کسی دوسرے کے حصے میں آئی ہے تو اس کا یہ مطلب ہرگز نہیں ہے کہ اس شخص کو بھی اس حوالے سے کچھ محسوس نہیں ہورہا ۔ دوسروں کو سنیں ، انہیں سمجھنے کی کوشش کریں اور جو نارمل نہیں ہیں ، انہیں کہیں کہ ……. It’s Okay! اپنے اردگرد کے لوگوں کی مدد کریں ، اس سے انکی زندگی بھی آسان ہوگی اور آپ کی اپنی بھی، جو دوسروں کے لیے آسانی پیدا کرتا ہے اس کے راستے اللہ آسان کردیتا ہے۔
اس کے علاوہ ، اپنے آپ کو بھی اسپیس دے لینی چاہیے . جب ہم کچھ نہ کرسکیں تو It’s Okay کی تھپکی دے کر اپنی ذات کو پرسکون کرنا چاہیے . اتنا تو ہم اپنے لیے کر ہی سکتے ہیں ۔ زندگی کو ایک مختلف زاویے سے دکھاتا یہ ڈرامہ مجھے اچھا لگا، ایسے موضوعات کی ضرورت ہمارے ہاں بھی ہے کیونکہ گھریلو سیاست سے آگے بڑھ کر ہمیں لوگوں کی مدد کرنے والے مواد کو دیکھنے اور دکھانے کی ضرورت ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں