کیا وزیراعظم ہم سے مخلص ہیں؟ – زبیر منصوری




جناب وزیر اعظم شکریہ آپ کراچی تشریف لائے .چلئیے دیر سے ہی سہی ،تب ہی سہی جب ہماری بستیاں ہم نے پھر خود سے بسا لی ہیں آپ نے ازراہ عنایت تکلیف اٹھاکرفضائی جائزہ لیا ہم آپ کے احسان مند . جناب وزیراعظم صاحب آپ نے 1100 ارب روپے کا اعلان کیا ہم پھر شکر گزار ہیں آپ نے مرہم رکھا ۔۔۔
مگر جناب وزیراعظم صاحب کیا کراچی کا مسئلہ پانی سیوریج ، سالڈ ویسٹ اور ٹرانسپورٹ ہے ؟ نہیں جناب وزیر اعظم یہ پیکیجز تو کراچی کے نام پر پہلے بھی اعلان ہوتے رہے کراچی کا اصل مسئلہ کام چور کرپٹ قیادت ہے . ان کے بجٹ بچ جاتے ہیں کام نہیں ہو پاتے یہ پیسہ کھا جاتے ہیں . واللہ آپ کے بائیں جانب بیٹھے صاحب کی منہ پر باندھی پٹی کو ایمانداری اور کچھ نہ کھانے کی علامت مت سمجھئے گا ان کی پارٹی اور بیوروکریسی اور وہ آپ کے اتحادی ایم کیو ایم والے دانت تیز کر رہے ہیں کہ اس پیکج کی کس طرح مردار خوری کرنی ہے یہاں اتنی چھلنیاں ہیں کہ آپ کو اندازہ تک نہیں ……. ان کا یہ سارا پیکج بہہ کر پی پی کے وزیروں افسروں اور نوکروں چاکروں کے باہر اور ملک کے اندر کھاتوں میں جمع ہو گا اور آپ کام ڈھونڈتے رہ جائیں گے اور جان کی امان پاوں تو پچھلے برس کے 162 ارب کے پیکج کا سوال کروں کہ وہ کہاں گیا ؟
جناب وزیراعظم …..! آپ سے برسوں پہلے بھی عرض کیا تھا ، ملک کا مسئلہ نہ معاشی ہے نہ معاشرتی سارا مسئلہ اخلاقی ہے . یہاں آپ کی ٹیم سمیت سب چور ہیں یا شہرت اور دبدبہ کے دلدادہ ہیں . یہ صرف تصویریں بنانے والے مجنوں ہیں . جناب وزیراعظم اس شہر سے مخلص ہیں تو اسے کسی ایماندار آدمی کے سپرد کیجئیے اور ڈنڈا اس کے ہاتھ میں دیجئیے ……. ورنہ اس 1100 ارب پر انا للہ پڑھ لیجئیے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں