کراچی شکوہ کناں ہے – روبینہ اعجاز




پاکستان کا سب سے بڑا ، سندھ کا دارالخلافہ  اور دنیا کا چھٹا بڑا شہر کراچی …….. جس کی حیثیت  پاکستان میں ریڑھ کی ہڈی کی سی ہے ۔ پھر اس بات سے انکار نہیں کیا جا سکتا کہ کراچی تجارتی ، صنعتی اور تعلیمی لحاظ سے پاکستان میں سب سے زیادہ آگے ہے ۔ کراچی کا ہوائی اڈا اور بندرگاہ ملک میں سب سے بڑی ہیں ۔

کراچی کی زمین نا صرف رقبہ کے حساب سے وسیع ہے بلکہ اس کے اندر اتنی وسعت ہے کہ یہاں ہر قومیت ہر زبان ہر نسل  ہر پیشے کے لوگ آکر آباد ہوئے اور اس نے ان کو پناہ دی کراچی سب کو سہارا دینے والا روزی مہیا کرنے والا شہر ہے۔ ماضی میں کراچی کو روشنیوں کا شہر کہا جاتا تھا ۔ یہاں کی سڑکیں صاف ستھری اور کشادہ تھیں ۔ یہ ایک پررونق اور پرسکون شہر تھا ۔ مگر اب کچھ سالوں سے یہاں کی حالت بد سے بدتر ہوتی جارہی ہے۔ روشنیوں کے شہر میں اندھیروں کا راج ہے۔ شہر کی یہ حالت زار ہے کہ  معمول سے زیادہ بارشوں میں یہاں کی تمام سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہو جاتی ہیں ۔پورا شہر ندی نالوں کی شکل میں تبدیل ہو جاتا ہے۔یہاں کا سکون بے سکونی میں تبدیل ہو چکا ہے ۔ گلی محلوں میں چھینا جھپٹی اور مختلف وارداتیں ہوتی ہیں چوری ، ڈاکہ زنی سے یہاں کے شہری پریشان ہیں ۔ جا بجا گندی کے ڈھیر نظر آتے ہیں ۔

سو یہ ایک گندہ اور غیر محفوظ شہر بن چکا ہے۔یہاں تک کہ باغات کو ختم کر کے رہائشی علاقے بنا دیے گئے ہیں۔ابادی بڑھتی جارہی ہے اور وسائل کم ہوتے جارہے ہیں۔شہر میں درختوں کی کمی کی وجہ سے ہریالی بہت کم نظر آتی ہے۔ سرکاری اسپتال۔سرکاری یونیورسٹیاں  یہاں کی آبادی کے لحاظ سے کم ہیں ۔ لہٰذا  نجی تعلیمی ادارے اور اسپتال قائم کیے گئے ہیں جس میں یہاں کے شہری بھاری رقم ادا کرتے ہیں۔آخر  کراچی کےساتھ یہ نا انصافی کب تک ہوتی رہے گی۔اس کے ساتھ غیر منصفانہ رویہ کیوں اپنایا جا رہا ہے . ان ابتر حالات میں شہر پکار پکار کر کہہ رہا ہے۔ وہ شکوہ کناں ہے کہ

کس سےدل کی بات کروں کون سننےوالاہے
یہاں تو جھوٹی اناؤں نے قد نکالا ہے

آخر کب تک یہاں کی پڑھی لکھی ، باشعور عوام  خاموشی سے یہ تماشہ دیکھتی رہے گی ۔ آخر  حق کے لیے آواز بلند کرنے کی ضرورت ہے  کہ کراچی کو اس کا حق دیں ۔ اس کو پہلے جیساپر سکون۔ شہر بنا ئیں۔ یہاں کی عوام کو ہر طرح کی سہولیات دیں۔ یہاں کی عوام کو بھی سمجھ جانا چاہیے کہ ہمارے لئے کون بہتر ہے کون ہمارے برے وقت میں ساتھ دیتا ہے ۔ کون ہماری مشکلوں کو آسان کرتا ہے۔ مستقبل میں شہر کی بہتری کیلئے ابھی سےلانحہ عمل تیار کرنے کی ضرورت ہے تاکہ یہ پہلے جیسا شہر بن جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں