ادھوری محبت – خولہ زبیری




ہم اکثر چاہتے ہیں کہ کوئی آئے اور ہمیں گرنے سے پہلے تھام لے ، جو ہمیں روٹھنے سے پہلے منا لے ، جو کہے بغیر دل کا حال جان لے اور جو معافی کا لفظ نکالتے ہی ایک پیار بھری نظر ڈالے اور ہمیں معاف کردے ! ہم ایسے کسی کے انتظار میں رہتے ہیں اور یہ نہیں سوچتے کہ وہ تو رہتا ہی ہے دل میں ہمارے ہماری رگ جاں سے بھی قریب !

بس ہم ہی ہیں جو اسے پہچان نہیں پاتے ۔۔۔ آخر کون ہے وہ جو کٹھن اوقات میں ہمیں تھام لیتا ہے ، جو غلطیوں سے بھی درگزر کرجاتا ہے۔ آنسووں کے عکس میں اور ٹوٹے ہوئے دل کے ٹکڑوں میں جو نظر آتا ہے ۔ وعدہ کرتا ہے جو ہم سے کہ قدم قدم پہ وہ ساتھ دے گا اور جو موتی کی مانند ایک ایک قیمتی آنسو کو اپنی مٹھی میں جکڑ لے گا ۔ اتنے بڑے ساتھ اور بے پناہ محبت کی ایک ہی تو شرط رکھتا ہے . وہ کہ زندگی اس کے نام کردو ……… ! بھلا کون ہے وہ ؟ اتنا خیال رکھنے والا اور اتنی محبت کرنے والا ؟ جو دیکھتا بھی ہے کہ جس سے محبت کرتا ہے وہ تو اپنی زندگی میں مصروف ہے اور دنیا کی رنگینیوں میں گم ہے ! لیکن پھر بھی وہ محبت کرنا نہیں چھوڑتا ! پیار جتانا نہیں چھوڑتا ! قدم قدم پہ ساتھ دینا نہیں چھوڑتا !

چاہے تو وہیں جلا کہ بھسم کردے یا وہیں سانس کی ڈور کاٹ دے لیکن پھر بھی کچھ نہیں کرتا اپنے محبوب کا انتظار کرتا ہے کہ کب وہ پلٹ آئے!! اتنی محبت ، اتنا پیار؟ بس ایک وفاداری ہی تو مانگتا ہے بس ایک وفا کا پاس ہی تو مانگتا ہے بس بدلے میں محبت ہی تو چاہتا ہے!! ایسا ہے میرا اللہ!! کیا اتنا بھی نہیں کر سکتے ہم محبت کی خاطر؟؟

اے ٹوٹے ہوئے دل اے بھیگی آنکھ
اے محبت کی متلاش بے چین روح
نہ ہو غمگین کہ محبت کرنے والا ہے پاس ترے
جو چاہتا ہے تجھے جو سامنے ہے ترے
پا لے اس کو دوڑ کے جلدی
کہ روٹھ نہ جائے کہیں وہ تجھ سے
بتا دے اس کو کہ محبت ہے اس سے
کہ پھر وہ تجھے تھام لے ہر دم
کہ پھر وہ ساتھ دے قدم قدم!!

اپنا تبصرہ بھیجیں