ان لمحوں سے کیا پایا ہے – بنت شیروانی




دوست سے باتیں کۓ جارہی تھی کہ کسی کتاب کا ذکر آ نکلا ۔ اور چند لمحوں میں اس نے وہ کتاب پی ڈی ایف کی صورت میں ارسال بھی کر دی ۔ اب نظریں اس کتاب کو دیکھ رہی تھیں کہ ذہن میں سوال آیا کہ آج بس ایک ٹچ پر علم حاصل کرنا جتنا آسان ہوگیا ہے ……

کہیں اس کے بارے میں سوال تو نہیں ہوگا کہ صرف انگلی کو اسکرین پر لگانے کی دیر تھی اور تمھارے پاس ان گنت کتابیں دستیاب ۔تو تم نے اس کا کیسے استعمال کیا؟؟ اور میں اس سے پہلے کہ اس کا جواب سوچتی کہ ذہن نے کہا کہ ہاں آج اس انسان کی بہت بڑی آزمائش بس ایک ٹچ کرنے پر ہے کہ وہ اس کو کہاں اور کیسے استعمال کرتا ہے ۔۔۔ کہ اس کے ایک ٹچ پر اس کی زندگی کے قیمتی لمحات گزر جاتے ہیں۔ اور اُن پانچ سوالوں میں سے ایک سوال کہ جوانی کو کن کاموں میں گزارا ؟

اُس کی جوانی کا وقت بس ایک ٹچ پر گزر جاتا ہے۔ چاہے وہ یوٹیوب کے ان گنت ولوگز ہوں ، یا کوئی بھی شوز ،ٹک ٹاک تو لائکی، انسٹا گرام ،آن لائن گیمز تو اور بھی بہت کچھ ……… بس ایک ٹچ ہی تو ہے جو ہمارے ماہ و سال پی جاتے ہیں اور ان میں گزرنے والے لمحات ہم سے پوچھتے ہیں کہ

لمحہ لمحہ بیت رہا ہے لمحہ لمحہ پوچھ رہا ہے
کیا کھویا ہے ان لمحوں سے کیا پایا ہےان لمحوں میں

اپنا تبصرہ بھیجیں