ایک مضبوط عورت ہونے کا معیار کیا ہے….! – شاذیہ ظفر




ہمارا کلیہ تو یہی ہے کہ ایک مضبوط عورت وہ ہے جسکی تخلیقی صلاحیتیں اپنے گھر اور معاشرے کے لیے کارآمد ہوں۔۔ جسکا محور و مرکز اسکا پروفیشن اور اسکا گھر ہو ۔۔ جو نہ تو کسی روبوٹ کی مانند بےحس مشین ہو۔۔اور نہ کسی بے زبان جانور کی طرح عقل و شعور سے عاری ۔۔کہ جس کھونٹے سے باندھا سر جھکائے بندھ گئی۔۔۔

بلکہ وہ سماج میں رائج تمام مسائل اور ان سے وابستہ رویوں کی ٹھیک جانچ پرکھ رکھتی ہو۔۔۔ اور جو زندگی کے ہر پہلو نہ صرف مکمل اور درست جانکاری رکھتی ہو بلکہ اپنا مضبوط اور مدلل اور واضح موقف دنیا کے سامنے پیش کرنے کے ہنر سے بخوبی واقف ہو۔۔۔ جو عزت کرنا بھی جانتی ہو اور کروانا بھی۔۔۔۔جسکی سوچ بہت مثبت اور متوازن ہو۔۔۔ وہ جس بھی میدان میں سرگرمِ عمل ہو ۔۔۔جب لوگ اسے دیکھیں تو آنکھیں ٹھنڈی کرنے اور تفریح کا ذریعہ نہ سمجھیں بلکہ انکے انداز میں اسکے لیے وہی احترام ، تعظیم ہو جو وہ اپنے گھر کی محرم اور معتبر خواتین کے لیے مختص سمجھتے ھیں۔۔۔اب سوال یہ ھے کہ سوشل میڈیا پر موجود مضبوط خواتین کی کامیابی یا شہرت کا معیار کیا ہے۔۔۔ ٹائم لائن پہ موجود پوسٹس کی مقبولیت کا معیار کیا ہے۔۔۔؟؟

پوسٹس پر داد و تحسین کے ڈونگرے برسائے جانے کا۔۔ اور نتیجے میں حاصل اس شہرت کا درست پیمانہ کیا ہے ؟؟ اگر کسی خاتون کی ظاہری شخصیت کی خوبصورتی ۔۔ اسکی ہنرمندی پر ، تخلیقی صلاحیتوں پر اور اسکی خوبصورت پختہ سوچ پر فوقیت لے جائے ۔۔ وہ بھی یوں کہ یہی ظاہری محاسن اسکا مضبوط تعارف اور حوالہ بن جائیں۔۔۔تو ہمیں رکنے اور سوچنے کی ضرورت ہے کہ ہم یہاں ایک مضبوط عورت کے کس معیار کو ترویج دے رہے ہیں . بحیثتِ عورت سوشل میڈیا پر تفریح اور وقت گذاری کا ذریعہ بننے کے بجائے سوچ کو مہمیز دینے کی کوشش کرنے والوں میں ، کچھ اچھی سیکھ دینے والوں میں ، اچھی تربیت لینے اور دینے والوں شامل ہونا اور یوں ایک مضبوط معاشرے کی تشکیل میں اپنا معاون کردار ادا کرنا ہی ہماری اصل کامیابی ہے ۔۔۔

اور یہی ہمارے مضبوط عورت ہونے کی علامت بھی ہے اور ضمانت بھی اللہ ھمیں اپنی صلاحیتوں کے درست استعمال کا فہم عطا فرمائے۔۔

اپنا تبصرہ بھیجیں