Home » حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم بحیثیت معلم – ارحمہ اقبال
بلاگز

حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم بحیثیت معلم – ارحمہ اقبال

تعلیم و تدریس ایک معزز قابلِ احترام منصب ہے، جس کے لئے کچھ شرائط اور آداب ہیں. جن کا جاننا اور عملی مشق کرنا ایسا ہی ضروری ہے جیسے کسی فن کو سیکھنے کے لئے اس کی عملی مشق ضروری ہے. ایک معلم کے لئے ضروری ہے کہ اس میں ایک کامیاب استاد کی صفات اور خصاص موجود ہوں. جس سے اس کے تجربہ میں مزید اضافی ہوتا رہے، جب وہ تدریس کے میدان میں قدم رکھے تو طلباء اس سے مستفید ہوں، تاکہ وہ خود بھی عملی اور روحانی لذت محسوس کر سکے.

تعلیم و تدریس ایک مقدس منصب ہے جو سیدالنبیاء محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی اعلی صفات میں سے ایک صفت اور فرائض نبوت میں سے ایک اہم فریضہ ہے. خود رسول اللہ ﷺ نے بھی اپنا تعارف بحیثیت معلم کرایا ہے۔ آپؐ کا ارشاد ہے: ”اِنَّمَا بُعِثْتُ مُعَلِّمًا” یعنی ”میں تو صرف معلم بناکر بھیجا گیا ہوں’‘۔ (سنن ابن ماجہ، باب فضل العلماء والحث علی طلب العلم، بروایت عبداللہ بن عمروؓ)لفظ “معلم” عربی زبان کا لفظ ہے جس کے معنی “وہ شخص جو کسی گروہ کو علم دین سکھانے پر مامور ہو.” حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم پوری نوعِ انسانی کے لئے معلم بنا کر بھیجے گئے، آپ نے نہ صرف جہالت کے اندھیروں میں اسلام کی شمع روشن کی، بلکہ زندگی کے ہر ہر پہلو میں ہماری رہنمائی کی، آپ کی زندگی، اقوال اس بات کا عین ثبوت ہے کہ دنیا رہنے کی جگہ نہیں بلکہ آزمائش اور امتحان کی جگہ ہے اور اصل زندگی ہے جسے ہم نے اپنے اعمال سے پانا ہے.
اترے گا کہاں تک کوئی آیات کی تہہ میں
قرآن آپکی (ص) خاطر مصروف ثناء ہے

حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم میں وہ تمام صفات صفات عالیہ موجود ہیں جو ایک معلم کامل میں مطلوب ہیں، آپ کمال علم، خلق عظیم، کمال شفقت اور رحمت جیسی صفات کے ساتھ موصوف تھے.
نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی حیات مبارکہ قیامت تک انسانیت کے لئے پیشوائے اور رہنمائی کا نمونہ ہے. قرآن مجید میں ارشادِ ربانی ہے: لَقَدْ كَانَ لَكُمْ فِیْ رَسُوْلِ اللّٰهِ اُسْوَةٌ حَسَنَةٌ ” حقیقت یہ ہے کہ تمہارے لئے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ذات بہترین نمونہ ہے.“بے شک رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی زندگی پر نوع انسانی کے لیے بہترین نمونہ ہے . آپ وہ معلم جن کی تعلیم و تدریس، کردار، قول و فعل، تحمل و برداشت، ایثار، عدل، استقامت اور ان جیسی بے شمار خوبیوں نے کفر و جہالت کے گھٹا ٹوپ اندھیروں میں اسلام کی شمع روشن کی. آج کے معلمین اور اساتذہ کو ہی نہیں بلکہ ایک طالب علم کو بھی چاہیے کہ اپنے کردار کو حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے اوصاف سے آراستہ کرے.

Add Comment

Click here to post a comment