Home » ایک برفانی تابوت حکومت کے لیۓ بھی – شہلا خضر
بلاگز

ایک برفانی تابوت حکومت کے لیۓ بھی – شہلا خضر

ایک اور سانحہ ۔۔ایک اور المیہ ۔۔ نااہل حکمرانوں کی نااہلی کا ایک اور  تمغۀ کارکردگی ۔۔۔۔۔ موئرخ لکھیں گے کہ نااہل حکمران ٹول ٹیکس اور ریوینیو سمیٹنے میں اتنے مگن تھے کہ عوام کی قیمتی جانوں کی فکر سے یکسر غافل ہو گۓ ۔

بے چاری عوام  خود ہی ان خون چوسنے والی چمگادڑوں کو ووٹ دے کر اپنا جان ومال ان کے سپرد کرتے ہیں ۔۔۔ تو ظاہر ہے  چمگادڑ کو تو ابنی خوراک سے مطلب ہے ۔۔۔اسے اپنے  شکار کی تکلیف کی کب پرواہ ہوگی ۔۔۔سال نو کے آغاز پر اپنے اہل خانہ کے ہمراہ خوشگوار لمحات کا خواب سجاۓ مری جانے والے سینکڑوں سیاح  حکومتی اداروں کی مجرمانہ غفلت اور بد انتظامی کے بھینٹ چڑھ گۓ ۔۔۔۔۔وزیر اعظم عمران خان صاحب دنیا جہان کے لوگوں کوپاکستان میں سیاحت کی دعوت دیتے دکھا ئ دیتے ہیں ۔۔۔۔۔پہلے وہ اپنی قابل انتظامیہ اور شاندار کارکردگی کا جائزہ تو لے لیں ۔۔۔ ابھی زیادہ وقت نہیں گزرا کہ لیاقت پور کے قریب تیز گام میں لگنی والی آگ چوہتر قیمتی جانوں کو نگل گئی ۔ ٹرین میں موجود عینی شاہدوں نے بتایا کہ ٹرین میں حادثے سے قبل  رات ہی سے الیکڑک وائرنگ میں سپارک تھا ۔۔۔جس کی کمپلین بھی کروائی گئی ۔۔پر  وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کمال مستعدی کا مظاہرہ کرتے ہوۓ بغیر کسی تحقیقاتی رپورٹ کا انتظار کیۓ سارا الزام گیس سیلینڈرز پر ناشتہ بنانے والے تبلیغی گروپ پر ڈال دیا ۔۔۔۔۔آج تک اس سانحے کے اصل محرکات منظر عام پر نہیں آۓ ۔۔۔ اسی نوعیت کی مجرمانہ غفلت کا مظاہرہ ایک سال قبل قومی سول ایوی ایشن کے  ادارے نے  کراچی طیارہ حادثہ دکھایا ۔۔۔۔

اس حادثے میں عید کی خوشیاں اپنے پیاروں کے ساتھ منانے کے ارادے سے سو کے قریب مسافر جان سے ہاتھ دھو بیٹھے۔ آج تک اس حادثے کی  تحقیقاتی رپورٹ اور حادثے کے  ذمہ داران معمہ بنے ہوۓ ہیں ۔۔۔۔۔گزشتہ روز مری سانحہ نے بھی حکومتی محکمہ جات کی بدانتظامی کی قلعی کھول دی ہے ۔۔۔۔۔ برفانی طوفان کے باعث  راستے بند  ہونے کی وجہ سے اپنی گاڑیوں میں پھنس کر بے گناہ افراد موت کے أغوش میں چلے گۓ ۔۔۔۔ سوال یہ ہے کہ جب محکمہ موسمیات نے شدید برف باری کی پیشن گوئی پہلے ہی سے کر رکھی تھی تو اتنی بڑی تعدادمیں سیاحوں کو مری کی حدود میں کیسے جانے دیا گیا ۔۔؟؟؟ اٹھارہ گھنٹے تک ریسکیو آپریشن کیوں نہی شروع کیا گیا ۔۔؟؟ برف میں پھنسے افراد تک ہنگامی بنیادوں پر ہیلی کاپٹروں کے ذریعے امدادی سامان پہنچانے کی کوشش کیوں نہی کی گئی ۔۔؟؟؟  برف باری کے موسم میں اس کی  مناسبت سے  ایس او پیز جاری کیوں نہیں کیے گۓ ۔۔؟؟ہمیشہ کی طرح حکمرانوں نے عوام کے سوالات کے جوابات نہ پہلے کبھی دیۓ ہیں اور نہ اب دے گی ۔۔۔۔ہمیشہ اپنی نا اہلی کا اعتراف کرنے سے انکار کیا اور کرتے رہیں گے ۔۔۔۔  آپ کی رعیت میں موجود عوام کی نگہداشت کا ذمہ آپ کے سر ہے ۔۔۔۔اس دنیا میں  تو آپ جھوٹ فریب اور مکاری سے بچ جائیں گے پراللہ کے پاس آپ کی اصلی  سچی اور کھری رپورٹ موجود ہے ۔۔۔ وہ آخرت میں کل عالم کے سامنے کھولی اور پڑھی جاۓ گی ۔۔۔۔۔اس دن سب بے گناہوں کے خون کا حساب دینا ہی پڑے گا۔…..

Add Comment

Click here to post a comment