Home » جنگ میں لڑتا ہوا گلاب – شگفتہ وسیم
بلاگز

جنگ میں لڑتا ہوا گلاب – شگفتہ وسیم

میری آج کی تحریر ، اسلام کی اس بہادر بیٹی کے نام …… جس نے کل ہی بھارت جیسے ملک میں ایک صدائے حق بلند کی یاد دہانی کرواتی چلوں بھارت وہ ملک ہے . جہاں پچھلے کچھ دنوں سے حجاب کے خلاف ایک سازش رچائی جا رہی ہے . باحجاب طالبات کے تعلیمی اداروں میں داخلے پر پابندی لگائی جا رہی ہے .

وہاں رہنے والی ہماری مسلمان بہنوں کو ہراس کیا جا رہا ہے،انہیں ڈرایا جا رہا ہے، انکو ہر طرح سے اذیت کا نشانہ بنایا جا رہا ہے لیکن اس اسلام کی بیٹی نے کل ان شیطانی چیلوں کو منہ توڑ جواب دیا اور ساتھ ہی ساتھ اللہ اکبر کا نعرہ لگاتے ہوئے….. اللہ کی وحدانیت کا اقرار کیا ۔جہاں یہ انکے لئے منہ توڑ جواب ثابت ہوا وہیں ہم مسلمانوں نے بھی اس بیٹی کے اس عمل کو خوب سراہا۔سوشل میڈیا پر اس بیٹی کی ویڈیو کو خوب وائرل کیا لیکن اگر ہم محاسبہ کریں تو اک بات ذہن میں آتی ہے کیا ویڈیو کو وائرل کر دینا اور اس کے عمل کو سراہنا یہ ہمارے لئے کافی تھا ؟؟ نہیں!جہاں یہ ان کافروں کی سازش کو ناکام کرنے کے لئے بہترین عمل تھا وہیں ہماری بے حجاب،بےپردہ مسلمان بہنوں کے لئے ایک زوردار طمانچہ تھا،ان بےغیرت بھائیوں کے لئے ڈوب کر مرنے کا مقام تھا جو اپنی بہنوں کو بے پردہ لے کر باہر گھومتے نظر آتے ہیں۔

آج وہ لڑکی بھارت جیسے ملک میں رہ کر حجاب کے لئے لڑ گئی لیکن افسوس آج ہم اسلامی ملک میں آزاد ہوتے ہوئے بھی حجاب کو بہت پیچھے چھوڑ آئے ہیں،اج ہمارے لئے حجاب کی کوئی اہمیت نہیں۔اسلام کا شرعی حجاب کوئی نئی ایجاد نہیں ہے بلکہ اسلام سے پہلے کی شریعتوں میں بھی حجاب موجود رہا ہے بےحجاب کا یہ جدید رجحان ہمارے اسلام کے تمام احکامات کے خلاف ہے۔اج اگر ہم اسلامی ملک پاکستان میں اردگرد نظر دوڑائیں تو ہمیں دیکھنے کو ملتا ہے کہ کس طرح اس ملک میں پردے کا جنازہ نکالا جا رہا ہے آج ہماری پاکستانی مسلمان بہنیں پردہ کرتے ہوئے بھی بےپردہ ہیں،ذرا آپ یاد کریں پاکستان تو وہ ملک تھا جس کا نظریہ ہی لاالہ الااللہ تھا . یہ وہ ملک تھا جس کی بنیاد ہی اسلام تھا تو آج پاکستان کی بنیادیں اتنی کمزور کیسے ہوگئیں،پاکستان اس بنیاد پر آزاد کروایا گیا تھا تاکہ اسلامی احکامات پر آزادی سے عمل کیا جا سکے تاکہ اللہ کی توحید کو پوری دنیا میں پھیلایا جا سکے لیکن افسوس آج ہم نے خود ہی پاکستان کی بنیادیں ہلاکر رکھ دیں.

آج ہماری بہنیں مغربی اطوار کی طرف مائل ہورہی ہیں ان کے طور طریقوں کو بڑھاوا دے رہی ہیں،یہ بہت ہی افسوس کی بات ہے کہ آج ہم اپنے اسلام سے دور ہوگئے آج ہماری عورتیں کھلے عام جسموں کی نمائش کرتی پھرتی ہیں،اج ہم نے اسلامی لباس پہننے کے بجائے مغربی لباس پہننا شروع کردئیے ہیں لیکن جہاں کچھ احمق تعلیم یافتہ عورتیں پردے کی دھجیاں اڑا رہی ہیں ہیں وہیں ہماری کچھ اسلام کی بیٹیاں ابھی زندہ ہیں،جہاں مغرب زدہ عورتیں جو عورت کی عریانیت اور بےحجابی کی دعوت دے رہی ہیں وہیں ہماری اسلامی بیٹیاں اسلامی بیداری کی طرف دعوت دے کر انکو بری طرح ناکام کر رہی ہیں جسکی لہر اب پوری دنیا میں اٹھ رہی ہے اور کل بھارت میں اسلام کی بیٹی کی صدائے حق،حجاب کے لئے اٹھائے جانے والی آواز اس بات کا منہ بولتا ثبوت ہے آخر میں میرے چند الفاظ میری اسلامی بہن کے نام جس نے ہمارے ہمارے سوئے ہوئے ضمیروں کو بیدار کیا۔

جنگ میں لڑتا ہوا گلاب دیکھا
لہو لہان آنکھوں میں خواب دیکھا
کہیں گے لوگ یہ فخر سے صدیوں تک
ہم نے نقاب میں انقلاب دیکھا

Add Comment

Click here to post a comment