Home » لاحول ولا قوہ الا بالاہ – افشاں نوید
بلاگز

لاحول ولا قوہ الا بالاہ – افشاں نوید

جو ہو چکا اور ہونے جارہا ہے اس میں خدا بندے سے اس کی رضا نہیں پوچھ رہا۔۔۔
مگر۔۔۔ ہماری الہامی کتاب یہ بتاتی ہے کہ ہر چیز میں اخلاقی درس بھی پنہاں ہوتے ہیں۔۔

کبھی مخالفت میں اس حد تک نہ جائیں کہ آپ کو اپنے دشمن کا عکس دکھائی دینے لگے۔۔
ایک وقت ایسا آتا ہے کہ آپ ہذیانی کیفیت میں مبتلا ہوجاتے ہیں دشمن آپ کے اعصاب پر طاری ہوجاتا ہے۔
آپ دشمن کو سوچتے،اسی کو بولتے،اس کے حصار میں قید ہوجاتے ہیں۔۔۔۔
یہ دشمن کی سب سے بڑی کامیابی ہوتی ہے کہ وہ آپ کو اپنی قید سے باہر نکلنے نہیں دیتا۔۔
لوگ محبت کی باتیں پسند کرتے ہیں نہ کہ دشمنی کی۔۔

بعض اوقات آپ کے دوست آپ کو غیر دانشمندانہ مشورے دے کر وہ نقصان پہنچا دیتے ہیں جہاں تک آپ کے دشمن کی سوچ بھی نہیں جاتی۔۔
زیرک دوستوں کو تلاش کیجئے۔
زبان کی بے احتیاطی وہ خنجر ہے جس کے زخم کبھی نہیں بھرتے۔
کراما کاتبین ہی نہیں لکھتے لوگوں کے دلوں پر بھی رقم ہوجاتے ہیں آپ کےنفرت بھرے لہجے اور الفاظ۔۔

اپنے مخالفین کو برے ناموں اور تحقیر سے نہ پکاریں۔
قدرت سب کچھ برداشت کرلیتی ہے مگر نہیں برداشت کرتی تو کبر۔۔
اپنی طاقت پر بھروسہ نہیں ہونا چاہیے۔
کوئی آخری گیند تک نہیں جاسکتا،کسی کو اپنے قوت بازو پر بھروسہ نہیں ہونا چاہیے مگر اللہ کی نصرت پر۔۔

اسی لیے لاحول ولا قوۃ آلا باللہ کی دعا سکھائی گئی کہ ہم کچھ نہیں کرسکتے مگر جو آللہ چاہے۔
آپ بہت مضبوط اعصاب کے مالک بھی ہوں تو دوسروں کو اعصابی جنگ میں مت دھکیلیں۔۔
جب قوموں کے اعصاب تھکنے لگتے ہیں تو دشمن کو اسلحہ کے استعمال کی ضرورت نہیں پڑتی۔

Add Comment

Click here to post a comment