عطیہ – شہزاد مرزا




جب سننے کو ملتا ہے کہ……. کرونا کرائسس سے متاثرین کے لئے طیب اردگان نے اپنی 7 ماہ کی تنخواہ عطیہ کرنے کا اعلان کیا ہے،
انڈیا کے امیرترین مکیش امبانی نے 50کروڑ روپے دئیے ہیں، بالی ووڈ کے اداکار اکشےکمار نے 5کروڑ ڈونیٹ کئے ہیں، انڈین کرکٹرز نے اچھی خاصی رقم کھلاڑیوں سے اکٹھی کر کے جمع کروائی، ہالی ووڈ کی مقبول اداکارہ انجلینا جولی نے 10لاکھ ڈالر دینے کا اعلان کیا ہے………..اس کے علاوہ بھی کئی نامور شخصیات، شوبز سے وابستہ، کھلاڑی، بزنس مین کھل کر ڈونیشن دے رہے تو جہاں ان پر رشک آ رہا ہے وہیں اپنے ملک کے امیر اور نامور طبقوں کے کردار پر شدید غصہ اور نفرت پیدا ہو رہی ہے……….عمران خان نے نہ خود کبھی عطیہ کیا اور نہ اپنی اے ٹی ایمز سے مطالبہ کیا، ورنہ جہانگیرترین، شاہ محمود قریشی، فیصل واؤڈا، عثمان ڈار، زلفی بخاری، اعظم سواتی یہ سب اربوں پتی ہیں، یہ ممبران اسمبلی خریدنے کے لئے خرچ کر سکتے، سیاسی جلسوں کے لئے جہازوں کے اخراجات اٹھا سکتے، جہاز پر عمرے کر سکتے مگر غریب عوام کی مدد کے لئے ایک روپیہ کا عطیہ بھی نہیں دے سکتے، کپتان بھی ان سے مانگنے کی بجائے ہمیشہ کشکول عام عوام کے سامنے رکھ کر بھیک مانگنا شروع کر دیتا ہے۔
اس کے علاوہ شریف فیملی بھی اربوں کھربوں کی جائیدادیں رکھتے مگر اپنی جیب عوام کے لئے نہیں کھولتے، اب بھی شہباز شریف اپنے ممبران سے پیسوں کا مطالبہ کیا مگر خود کوئی اناؤنس نہیں کیا، اسی طرح زرداری ٹولہ بھی سب مالدار ہے، ان کے گھر اور ملیں اربوں کی ہیں مگر عطیہ کرنا تو ایک طرف…….. وہ تو پہلے بےنظیر اسکیم سے چوری کرتے رہے اور اب سنا …..کرونا کی امداد پر بھی خوب ہاتھ صاف کر رہے……… ملک ریاض، میاں منشا، ، خاشوانی، سٹاک ایکسچینجرز ، وغیرہ بھی فی الحال خاموش ہیں، جاگیردار بھی پتا نہیں کہاں مر کھپ گئے….؟ لاکھوں کمانے والے اداکاروں میں سے کوئی سامنے نہیں آیا، کروڑوں کمانے والے کرکٹرز بھی گدھے کے سینگوں کی طرح غائب ہو گئے، میڈیا مالکان کی بھی بولتیان بند ہیں، بھلا اتنے غلیظ امراء کے ہوتے اس ملک میں غریب سکھ نہیں نیند سو سکتا ہے، یہ لٹیرے اور ڈاکوں ہیں، ہمدرد نہیں۔
یاد رہے جماعت اسلامی اور الخدمت ابھی تک 45 کروڑ روپے خرچ کر چکی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں