زیور علم – بنت شیروانی




ہم میں سے جس کے والدین حیات ہیں……… اللہ تعالی انھیں صحت و عافیت والی لمبی زندگی دے اور جس کے والدین اس دنیا سے جا چکے ہیں……. اُن سب کی مغفرت فرما کہ جنھوں نے اپنا پیٹ کاٹ کر اور اپنی خواہشات کی قربانی دے کر ہمیں علم کے زیور سے آراستہ کیا کہ آج ہم گھر بیٹھے اپنے بچوں کو پڑھا سکتے ہیں.
ہو سکتا ہے کہ کوئ کہ دے کہ (ہماری امی نے ہمیں نہیں پڑھایا ہم ٹیوشن جاتے تھے لیکن اس اسکول اور ٹیوشن جانے کے لۓ سوتے میں سے اٹھا کر تیار کرنے والی وہ ہماری ماں ہی ہوتی تھیں) اللہ تعالی ہمارے کمانے والوں کے رزق ،صحت میں خیروبرکت عطا فرما اور ان کو عافیت والی لمبی زندگیاں دینا کہ جنھوں نے ہمیں موباءل جیسی نعمت اور انٹرنیٹ جیسی سہولت دی۰ہوسکتا ہے کہ (کوئی پیاری سہیلی یہ کہ دے کہ یہ موباءل تو میں نے اپنی سیونگ یا پوکٹ منی یا اپنی کمیٹی کے نکلنے پر لیا تھا تو پیاری سہیلی اس کے پیچھے بھی ہمارے ان محرم رشتہ داروں کی محبت ہے کہ جنھوں نے ہم پر اتنی ان معاشی ذمہ نہیں ڈالی کہ جس کی بنا پر ہم سیونگ کر کے یا کمیٹی کے نکلنے کی بنا پر اپنا موبائل خریدنے کے قابل ہوۓ)اور اللہ تعالی کا بے حد شکر اور ہم پر اسکی بے انتہا رحمت کہ ہمیں اس قابل بنایا کہ ہم ٹیکنالوجی کا مثبت استعمال کر رہے ہیں .
اور دنیا میں جتنے ذرے اس سے زیادہ درود وسلام ہمارے پیارے نبی صلی اللہ علیہ وسلم پر کہ جن کی بدولت ہماری جنس کو زندہ رہنے کا حق ملا ورنہ (ہماری جنس تو پیدا ہوتے ہی زندہ گاڑھ دی جاتی تھی) اور ہم پر فرض کیا گیا عمل حاصل کرنا کہ”علم حاصل کرنا ہر مرد اور عورت ہر فرض ہے کہ جس کی بدولت ہم علم حاصل کر سکے اور بچوں اور اپنے پیاروں کو بھی علم دے سکے۰

اپنا تبصرہ بھیجیں