خدمت کے جذبے – عالیہ عثمان




چین سے شروع ہونے والے کورونا وائرس نے اس وقت پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لیا ہوا ہے….. ہر ملک کی حکومت کوشش کر رہی ہے کہ کسی طرح اس وائرس کو مزید پھیلنے سے روکا جا سکے۔
کرونا وائرس کے خلاف جنگ جیتنے کے لیے وفاقی حکومت متحرک ہے .افواج پاکستان رینجرز پولیس ڈاکٹرز اورپیرا میڈیکل اسٹاف کو سلام پیش کرتے ہیں جو اپنی جانوں کی پرواکیے بغیر اس موذی وائرس کےسنٹرز میں کام کر رہے ہیں یہ ہمارے قومی ہیروز ہیں۔اللہ تعالی پوری انسانیت پر اپنا رحم اور فضل و کرم فرمائے اور سب کو اپنے حفظ و امان میں رکھے، پاکستان ایک بہادر قوم ہے اور ہر مشکل کا مقابلہ کرنا جانتی ہے وقت کا تقاضہ ہے کہ کرونا وائرس کے خلاف پوری قوم متحد ہو جائے اور ہر شہری حکومت کی اقدامات پر مکمل تعاون کرے تاکہ اس وباء کو جڑ سے ختم کیا جاسکے اس وقت سب کو ایک دوسرے سے سارے اختلافات ختم کرتے ہوئے ایک دوسرے کی خیر مانگنی چاہیے تاکہ سب محفوظ رہیں اور سب پر اللہ کا کرم ہو۔ حالیہ لاک ڈاؤنکی وجہ سے اسکولز، کالجز، یونیورسٹیز، تجارتی مراکز، شادی ہال سب بند ہے عوام سخت اذیت کا شکار ہیں، خصوصا غریب طبقہ تو غریب سے غریب تر ہوتا جا رہا ہے…..
ادویہ ساز صنعت ،کھانے پینے کا بحران سفری ضروریات ہر طرح سے پریشانی ہے۔ ایسے میں این جی اوزہوا کا تازہ جھونکا ہیں جس میں صفحہ اول الخدمت کی خدمت ہے لوگ ہاتھ اٹھا اٹھا کر الخدمت کے ہر کارکن کو دعائیں دیتے نہیں تھکتے یہ ایشیاء کی پانچویں بڑی این جی او بن گئی ہے۔ کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے اقدامات کے باعث سب سے زیادہ متاثر غریب طبقہ اور مزدور پیشہ افراد ھی ہوئے ہیں روزانہ کی بنیاد پر کام کرنے والے مزدور، اجرت پیشہ اور دیہاڑی والے افراد کی امداد کے لیے الخدمت کی خدمات قابل تعریف ہیں۔
الخدمت ہیلتھ فاؤنڈیشن پاکستان کے چاروں صوبوں کے ہر شہر، ہر ضلع ،گاؤں، گوٹھوں میں پہنچ کر انہیں راشن پانی اور ادویہ پہنچا رہے ہیں۔ قرنطینہ سنیٹر قائم کیے متاثرین کا حوصلہ بڑھانے کے لئے انہیں بریفینگ دی بڑی تعداد میں لوگوں میں ماسک اور صابن تقسیم کیے۔الخدمت ایک جانی مانی فلاحی تنظیم ہے ملک کو کسی بھی طرح کے حالات درپیش ہو ں وہ ہر فارم پہ کھڑی ہوتی ہے ۔ حکومت تو بعد میں نوٹس لیتی ہے حالیہ قدرتی آفت کرونا وائرس کی وباء نے پورے عالم کواپنے شکنجے میں جکڑا ہوا ہے مسلم غیر مسلم امیر غریب میں کوئی تفریق نہیں اس وباء کا سیلاب سب کوبہائے لیے چلا جارہا ہے ۔
الخدمت کے رضاکاروں نے جہاں مساجد کی صفائی ستھرائی میں کوئی کسر نہیں چھوڑی وہاں کرونا وائرس کے خاتمے کے لیے اسپرے کیا تو یہی سب کچھ الخدمت فاؤنڈیشن کے کارکن مندروں چرچز وغیرہ میں بھی کرتے رہے ان کا مقصد صرف انسانی جان بچانا ہےکسی مذہب کی کوئی تفریق نہیں حالانکہ اس سے پہلے کسی مسلمان رضاکار نے کبھی مندروں وغیرہ میں جھانکا تک بھی نہیں ہوگا لیکن انہوں نےبھائی چارے کی خاطر وہاں اسپرے کر کے اقلیتوں کی بھی حفاظت کی، سراج الحق صاحب کی ہدایت کے مطابق ملک بھر میں کھانےپینےکی جو اشیاء ضرورتمندوں میں تقسیم کی جا رہی ہیں ان میں بھی غیر مسلم افراد کا خاص خیال رکھا جا رہا ہے اور الخدمت کے ساتھ سراج الحق صاحب نےخواجہ سراؤں سے بھی ہمدردی کا مظاہرہ کیا۔الخدمت فاؤنڈیشن کے رضاکاروں کے ساتھ سب مل کر اس کڑے وقت میں ساتھ کھڑے ڈاکٹرز، نرسز اپنی ڈیوٹی انجام دینےجانفشانی سے مصروف عمل ہیں۔
کل ہی الخدمت فاؤنڈیشن سندھ کے نائب صدر ڈاکٹر عبدالقادر سومرو کرونا وائرس کے مریضوں کا علاج کرتے ہوئے خود بھی اس میں مبتلا ہوگئےاور جاں بحق ہوگئےاللہ تعالی مرحوم کی بہترین مغفرت فرمائے۔واقعی ان مجاہدوں نے تن من دھن سب کچھ انسانیت پر لٹا دیا اب ہماری ذمہ داری یہی بنتی ہے کہ ہم سب الخدمت کی خدمت اسی طرح کرکے اس کا حق ادا کر سکتے ہیں کہ اس کے لئے زیادہ سے زیادہ کام کریں ان کا ساتھ دیں، تاکہ وہ ایک دن پوری قوت کے ساتھ اسلام کا جھنڈا لہرا ئیں اور کہیں…!
ایک ہوں مسلم حرم کی پاسبانی کے لیے……….نیل کے ساحل سے لے کر تابہ خاک کاشغر

2 تبصرے “خدمت کے جذبے – عالیہ عثمان

  1. الخدمت فاٶنڈیشن نے ہر مشکل اور عوام کے لۓ پریشان کن حالات میں پاکستانی عوام کی مدد کی ہے۔ اور تاریخ اس کے کارکنوں کی عوامی خدمات سے بھری پڑی ہے۔ محترمہ عالیہ عثمان صاحبہ نے اس کالم کےذرعۓخدمات پر روشنی ڈالی ہے۔س

اپنا تبصرہ بھیجیں