آسانیاں بانٹیں – عمیمہ ساجد




پوری دنیا ایک عالمگیر وباء کی لپیٹ میں ہے …… لیکن ہم اپنے اردگرد غور کریں تو ہمیں ایسے مظلوم بھی نظر آئینگے جو افلاس اور بھوک جیسے حالات سے لڑ رہے ہیں.
لاگ ڈاؤن کے باعث روزانہ کی بنیاد پر کمانے والا غریب مزدور طبقہ سنگین مسائل میں مبتلا ہے…. رب العالمین کا لاکھ شکر ہے کہ وہ ہمیں ہمارا من چاہا رزق عطا کررہا ہے لیکن ایک غریب سفید پوش طبقہ ایسا بھی ہے جو ان مشکلات کے باوجود سوائے ذات الہی کے کسی سے کچھ نہیں مانگتا. لہذا صاحبِ مال اور استطاعت لوگوں کو چاہئیے کہ وہ یومیہ اجرت پر کام کرنے والے غریب اور پسماندہ طبقے کی عزت و حرمت کا پاس رکھتے ہوئے انکی مدد و امداد کریں اور اپنے مال میں انھیں بھی شریک رکھیں اور اللّٰہ کی عطا کردہ نعمت اسکے بندوں کے ساتھ بانٹیں تاکہ ان پر مزید کرم کیا جائے…
آج اس مشکل گھڑی میں ہم ایک فوج کی مانند ہیں کہ جس طرح فوج سرحدوں پر اپنے ملک و قوم کے تحفظ کیلئے کھڑی ہوتی ہے بلکل اسی طرح ہمیں بھی غریب طبقے تک بنیادی اشیاء اور رزق پہچانے کیلئے یکجا کھڑا ہونا ہے اور اس آفت کو مل کر عبور کرنا ہے….
چنانچہ ہم سب کی ذمہ داری ہے کہ ہم اپنی ضروریات کو پورا کرتے ہوئے مستحق اور ضرورت مند افراد کی مدد بھی کریں اور قربانی کا جذبہ اپنے اندر بیدار کریں تاکہ آسانیاں بانٹیں کا سلسلہ جاری رکھا جاسکے…
یاد رکھیں یہ آزمائش ہمارے ظرف اور صبر کا امتحان ہے تاہم انسانیت کی بقا اور اسکی خدمت ہم سب پر مقدم ہے… اللہ رب العزت عالم انسانیت کو اس آزمائش سے جلد نکالے.. آمین

اپنا تبصرہ بھیجیں