مولانا طارق جمیل صاحب کے نام کھلا خط – عالیہ زاہد بھٹی




محترم جناب طارق جمیل صاحب !
آپ کے علم کی جہاں تک بات ہے وہ جب قرآن وحدیث کی بات بتاتا ہے تو ہماری آنکھوں میں فخر سے محبت سے آنسو آجاتے ہیں،آپ نے سچ اور جھوٹ کی بات کرتے ہوئے جس دردمندی سے سب کو”جھوٹا”کہا ہماری نگاہیں جھک گئیں اور پیشانی عرق آلود ہو گئ……. آپ نے فرمایا پاکستان کا اور دنیا کا سارا میڈیا جھوٹا ہے،ہمارے دل آپ کے ہمنوا بنے آپ نے کہا پوری قوم کی حیا کا جنازہ نکل چکا،ہم مارے شرمندگی کے سر جھکا گئے کہ بات درست ہے،آپ نے امانت دیانت کے اصول کی بابت بھی کہا کہ ہم بہ حیثیت قوم ہر طرح کی تباہی کا شکار ہیں یہ بھی درست…!
مگر آپ کے علم پر یہ قوم قربان جائے …. مگر آپ کی ذاتی رائے قرآن کا حرف ہے نہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی حدیث ، سو اگر ایک عالم اٹھ کر “جاہل،انا پرست،مطلق العنان،غبی،خبطی،گانے باجوں کےپروردہ اور اس بے حیائ کو پروموٹ کرکے ڈی جے کلچر کو فروغ دینے والے،مہوش حیات جیسی ناچنے گانے والی کو سرکاری ایوارڈ دینے والے ، ڈیم فنڈ کھاجانے والے نااہل حکمران کی مدح کرےاس عالم کے “شعور”پر انگلی نہیں انگلیاں اٹھائی جائیں گی . میں بہت زیادہ اچھا گمان کرتے ہوئے یہ سوچ رہی ہوں کہ چونکہ طارق جمیل صاحب تبلیغی جماعت سے تعلق رکھتے ہیں اس لئے میڈیا کے پروگرام نہیں دیکھتے ہوں گے انہوں نے نہ ہی عمران نیازی کے اپنی ڈی جے ٹیم کے ساتھ ٹھمکے دیکھے ہوں گے اور نہ ہی،ڈی چوک پر عمران نیازی سے حسن کی داد لینے کے لئے آنے والی بے حیا سجی سنوری لباس کے نام پر دھجیاں پہنے ہوئے عورتوں کا ہجوم دیکھا ہوگا اور نہ عمران نیازی کی ذاتی محفلوں میں چلتی کوکین اور ہواؤں میں اڑادینے والا نشہ ءاقتدار دیکھا ہوگا .
طارق جمیل صاحب…! آپ کی سادگی اور صادق بیانی کے ہم دل سے قدر دان ہیں . مگر خدارا صاحب اقتدار لوگوں کی یک طرفہ تعریف سے گریز کریں کہ سچ معلوم کئے بغیر آپ کی تعریف آپ کو جھوٹا نہ ثابت کر دے . آپ کی ذمہ داری راہ دکھانا ہے کیونکہ آپ صرف مبلغ ہیں . اگر نظام کو اسلام پر استوار کرنے کا ارادہ کر بیٹھنے ہیں تو آئیں جماعت اسلامی کے پلیٹ فارم پر آکر رکن جماعت بن کر سچ سمجھنے کے لئے مولانا مودودی کے لٹریچر سے فائدہ اٹھا لیں کہ جس میں اسلامی نظام کے نفاذ کی ہر شق کی تفصیل موجود ہے اور ہاں فتنہ قادیانیت پر مولانا کی کتاب ضرور پڑھیں اور عمران نیازی کی حکومت کے آغاز سے اب تک صرف اسی ایک نکتے پر عمران نیازی کی حکومت کو دیکھ لیں گے تو مجھے یقین ہے اپنے بیانات پر عوام سے نہیں اللہ اور اس کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم سے معافی مانگیں گے…….
کیونکہ آپ سچے عاشق رسول ہیں!

مولانا طارق جمیل صاحب کے نام کھلا خط – عالیہ زاہد بھٹی” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں