عمل سے زندگی بنتی ہے جنت بھی جہنم بھی – سیدہ ابیحہ مریم




عمل سے زندگی بنتی ہے جنت بھی جہنم بھی …….. خاکی اپنی فطرت میں نہ نوری ہے نہ ناری ہے
اللہ رب العزت نے اس جہان میں موجود کسی شے کو بے مقصد نہیں بنایا ۔ حتی کے انسان کو بھی امربالمعروف ونہی عن المکر کی ذمہ داری دے کر تخلیق کیا۔ اس مقصد کے لئے انسان کو مختلف صلاحتیوں سے مالا مال کیا۔ سوچ بچارکے لئے عقل دی اور جدوجہد عمل کے لئے ہمت واستقلال سے نوازا۔ اب یہ ہمارا کام ہے کہ ان نعمتوں کو درست مقامات میں خرچ کریں…….اللہ تعالی نے مفلسی اور رئیسی کا اختیار بھی ہمیں دے دیا یعنی عمل اور سعی کر کے ترقی کی شاہراہ پر قدم رکھ سکتے ہیں۔ کامیاب لوگوں کی ترقی کا راز عمل پیہم اور جہد مسلسل ہے۔ اہل شہرت اور اہل عزت ہمیشہ عقل وشعور کے ساتھ ہر فیصلہ اور کام کرتے ہیں۔ وہ جو کہتے ہیں اس پر عمل بھی کر تے ہیں جو مضر اور وقت کا ضیائع نہ ہو۔
یقیں محکم عمل بیہم محبت فاتح عالم ………. جہاد زندگانی میں یہ ہے مردوں کی شمشیریں
دنیا میں موجود وہ لوگ جو تدابیر کرنے کے بجائے تقدیر پر انحصار کرتے ہیں صرف ذلت و رسوائی ان کا مقدر ہوتی ہے ۔ ایسے لوگ معاشرے میں کم ہمت اور بے عمل کہلاتے ہیں ۔ حقیقتا ایسے لوگ قول و فعل کا تٖضاد رکھتے ہیں ۔ وہ اپنی منزل کو پانے کے لئے کوشش نہیں کرتے جبکہ در حقیقت انسان وہ چیز نہیں پا سکتا جس کے لئے اس نے محنت نہ کی ہو ۔ اللہ تعالی بھی قران پاک میں فرماتے ہیں کہ
” و ان لیس للانسان الا ما سعی ” ترجمعہ:اور انسان کے لئے کچھ نہیں ہے مگر وہ جس کی اس نے سعی کی ہو……کوئی قوم یا ملک بھی اس وقت تک ترقی نہیں کر سکتا جب تک وہ کوشش نہ کرے۔ اس ملک کے جوانوں کے گفتار و کردار میں مطا بقت اور جستجو اور لگن کا جذبہ ہی ان کی کامرانی کا باعث بن سکتا ہے۔ قرآن مجید میں ارشاد کیا گیا،
’’ بے شک اللہ اس قوم کی حالت نہیں بدلتا جو خود اپنی حالت نہیں بدلتی ‘‘ (سورہ رعدہ) …… اللہ تعالی نے دنیا کو دارعمل بنایا ہے،دنیا آخرت کی کھیتی ہے اور قیامت کے روز ہمیں ہمارے اعمال کے ذریعے جانچا جاۓ گا تو دنیا میں کوئی بھی عمل کرتے ہوۓ یہ سوچنا بھی ہمارا فرض ہے کہ یہ کام اچھا ہے یا برا ؟؟؟ یہ کام ہمیں جنت میں لے جاۓ گا یا نہیں ؟؟ دراصل ایک مومن کی منزل جنت ہوتی ہے اور وہ اسے حاصل کرنے کیلئے کوشاں رہتا ہے۔ بطور مسلمان ہمیں بھی ایسے اعمال کرنے چاہئیں جو ہمیں جنت میں لے کر جائیں۔ کیونکہ ہم اچھے اعمال کے ذریعےہی اپنی دنیا اور آخرت سنوار سکتے ہیں
اور اگر برے اعمال کریں گے تو دنیا کی زندگی بھی ہمارے لئے جہنم جیسی ہو جاۓ گی۔ اللہ تعالی ہمیں نیک اور صالح کرنے کی توفیق دیں ( آمین ) ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں