امام عالی مقام کے چاہنے والوں کے نام پیغام ۔ زبیر منصوری




تھوڑی دیر کے لئے فرض کر لیں امام عالی مقام آج کے زمانے میں ہوتے تو کیا ہمارے شیعہ بھائی ایسے ہی ہوتے ؟ یہی کچھ کرتے ؟ کیا سنی مسلمان ایسے ہی ہوتے ؟ کیا سود اسلامی دنیا میں یونہی غالب ہوتا ؟ کیا ہماری درسی کتب اسی طرح ختم نبوت سے خالی ہوتیں . کیا عدالتیں انصاف سے تہی دامن ہوتیں . کیا سرمایہ دار ظالم اور جاگیر دار خون نچوڑ رہے ہوتے.
کیا طاقتور اسی طرح ووٹ لوٹ لیا کرتے ؟ کیا امام محترم اس سب کو دیکھ کر وہی رویہ اپناتے جو آج کے شیعہ اور آج کے سنی کا ہے ؟ پھر یہ امام کے چاہنے والے نہ ان کی طرح مزاحمت کرتے ہیں ……. نہ ان کی طرح نانا صلی اللہ الیہ وسلم کے دین کو بچانے کے لئے نکلتے ہیں …… نہ ان کی طرح جان مال گھر خاندان کٹواتے ہیں …….. نہ ان کی طرح جمہوری ملوکیت والوں سے نبردآزما ہوتے ہیں ۔
آخر امام عالی مقام کے چاہنے والے یہ مسلمان کل روز حشر انہیں کیامنہ دکھائیں گے ؟ کیا وہ اپنا غم منانے کو خود سے محبت کے لئے کافی سمجھ لیں گے ؟ امام محترم آپ رض اور آپ کے نانا صلی اللہ الیہ وسلم جس دین کے علمبردار تھے . میں بھی اس کا ایک ادنی پیروکار ہوں مجھے آپ کے ان وقتی ہنگامی عارضی اور عمل سے محروم پیروکاروں میں شامل نہ کیجئیے گا ۔۔۔!

اپنا تبصرہ بھیجیں