بھارت میں فیس بک کی ڈائریکٹر آف پبلک پالیسی مستعفی




نئی دہلی : بھارت میں فیس بک کی ڈائریکٹر آف پبلک پالیسی انکھی داس نے فیس بک پر الزامات نفرت انگیز پوسٹیں کنٹرول کرنے میں ناکامی کے الزامات پر استعفیٰ دے دیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ سماجی رابطے کی معروف ویب سائٹ فیس بک کی ڈائریکٹر آف پبلک پالیسی (جنوبی اور وسطی ایشیا) نے استعفیٰ دے دیا۔

میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ فیس بک کے بانی سے چالیس سے زائد سماجی حقوق کی تنظیمیں اور گروپس انکھی داس کے خلاف شکایت کرچکے تھے اور مارک زکر برگ سے مطالبہ کیا تھا کہ انہیں عہدے سے ہٹایا جائے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق انکھی داس کی جانب سے کمپنی کے مالی فائدے کے لیے نفرت انگیز پوسٹ ہٹانے سے انکار کی خبر دی تھی۔

میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے آنکھی داس سال 2012 سے بالواسطہ طور پرنریندر مودی اور بی جے پی کی حمایت کرتی رہی ہیں۔

رپورٹ کے مطابق سال 2014 میں لوک سبھا انتخاب میں بی جے پی کی جیت اور نریندر مودی کے اقتدار میں آنے سے ایک دن پہلے داس نے ایک پیغام میں لکھا، ’ہم نے ان کی سوشل میڈیا مہم میں کمال کر دیا ہے اور باقی سب تو تاریخ ہے‘۔

واضح رہے کہ اس کے علاوہ بھی انکھی داس نے سوشل میڈیا پر اپنے پیغامات دئیے تھے جس میں پی جے پی اور نیریندر مودی کی حمایت واضح تھی۔

Comments

اپنا تبصرہ بھیجیں