یورپ میں اسلامو فوبیا کی نئی لہر مزید تیز – Urdu News – Today News




ویانا: حکام کی جانب سے چھاپے کے بعد مسجد کو بند کردیا گیا ہے

برسلز (انٹرنیشنل ڈیسک) یورپ میں اسلاموفوبیا کی نئی لہر میں روز بہ روز تیزی آتی جارہی ہے، جس کی وجہ یورپی ممالک کی حکومتوں کا اس اسلام دشمن اور نفرت انگیز مہم کی سرپرستی کرنا ہے۔ اس کا تازہ واقعہ جرمنی میں پیش آیا ہے، جہاں ایک مسجد دھمکی آمیر خط موصول ہوا ہے۔ تُرک خبررساں ادارے اناطولیہ کے مطابق جرمنی کے قصبے ہوفنگن میں قائم اقصیٰ مسجد کو جمعہ کے روز ایک خط موصول ہوا، جس میں لکھا تھا کہ اسلام کا جرمنی یا یورپ سے کوئی تعلق نہیں۔ ہم اسلام اور اسلام ازم کو جرمنی سے ختم کرکے رکھ دیں گے۔ دوسری جانب فرانسمیں گستاخ استاد کے قتل کے سلسلے میں 3 نوجوانوں پر دہشت گردانہ جرائم کی سازش کی فرد جرم عائد کر دی گئی ہے ۔ سیموئل پیٹی کے قتل کی واردات میں اب تک 10 افراد پر فردِ جرم عائد کی جا چکی ہے۔ اس پیش رفت کی تصدیق فرانسیسی عدالتی ذرائع کی جانب سے ہفتے کے روز سامنے آئی۔ دوسری جانب آسٹریائی حکومت نے مساجد کو بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یہ فیصلہ پیر کے روز ویانا میں کیے گئے حملے کے تناظر میں کیا گیا۔ آسٹریائی وزارتِ داخلہ نے اعلان کیا ہے کہ بنیاد پرستانہ مذہبی نظریات کی افزایش کرنے والی مساجد پر تالے ڈال دیے جائیں گے ۔ وزیر داخلہ کارل نیہمیر اور وزیر انضمام سوزانے راب نے ایک پریس کانفرنس کہا کہ حکومت ملک کی مسلمان کمیونٹی کے ساتھ مساجد کی بندش کے معاملے پر بات چیت بھی جاری رکھے ہوئے ہے۔ بیان میں واضح کیا گیا ہے کہ مساجد کی بندش کا فیصلہ اس لیے کیا گیا کہ ان میں ایسے امور اور سرگرمیاں جاری رکھی گئی تھیں، جو مروجہ مذہبی نظریات اور ضوابط کی خلاف ورزی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں