امریکی انتخابات کو شفاف کہنے والے ایک اور اعلیٰ افسر کو نوکری سے ہاتھ دھونا پڑ گئے –




واشنگٹن: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے صدارتی انتخابات کو شفاف قرار دینے والے ایک اور اعلیٰ افسر کو برطرف کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق امریکی داخلہ سلامتی کے محکمے کے ڈائریکٹر کرسٹوفر کربز کو بھی نوکری سے ہاتھ دھونا پڑ گئے، ٹرمپ نے انھیں برطرف کر دیا۔

امریکی صدر نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ کرس کربز نے انتخابات کی شفافیت کے حوالے سے غلط بیان دیا، ٹرمپ نے دعویٰ کیا کہ انتخابات میں فراڈ اور دھاندلی ہوئی، مردہ افراد نے ووٹ کاسٹ کیا۔

صدر ٹرمپ نے یہ دعویٰ بھی کیا کہ ووٹنگ مشینوں کے ذریعے ان کا ووٹ تبدیل کیا گیا۔

The recent statement by Chris Krebs on the security of the 2020 Election was highly inaccurate, in that there were massive improprieties and fraud – including dead people voting, Poll Watchers not allowed into polling locations, “glitches” in the voting machines which changed…

— Donald J. Trump (@realDonaldTrump) November 18, 2020

دوسری طرف نومنتخب صدر جوبائیڈن نے متنبہ کیا ہے کہ ٹرمپ کے انتقالِ اقتدار سے مسلسل انکار کے سنگین نتائج برآمد ہوں گے، ٹرمپ نے تعاون نہ کیا تو کرونا وبا کے باعث مزید اموات ہو سکتی ہیں۔

ٹرمپ شکست کا غصہ اپنی ٹیم پر نکالنے لگے، اہم وزیر برطرف

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جوبائیڈن نے کہا وبا پر قابو پانے کے لیے صدر ٹرمپ کچھ نہیں کر رہے، ٹرمپ گالف کھیل رہے ہیں، اُن کا یہ اقدام سمجھ سے بالا تر ہے۔

واضح رہے کہ جب سے صدارتی انتخابات میں ڈونلڈ ٹرمپ کو جوبائیڈن کے ہاتھوں شکست ہوئی ہے، تب سے وہ اس کا غصہ اپنی ہی ٹیم پر نکالنے لگے ہیں، ایک ہفتہ قبل بھی انھوں نے امریکی سیکریٹری برائے دفاع مارک ایسپر کو برطرف کر دیا تھا۔

Comments

اپنا تبصرہ بھیجیں