اسرائیل نے فخری زادے کے قتل میں الیکٹرانک آلات استعمال کیے، ایران




تہران : ایرانی حکام نے دعویٰ کیا ہے کہ ایٹمی سائنس دان محسن فخری زادے کو ریموٹ کنٹرول ہتھیار سے قتل کیا گیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ایران کے نیوکلیئر پروگرام کی انتہائی اہم شخصیت اور فادر آف نیوکلیئر پروگرام سمجھے جانے والے سائنس دان محسن فخری زادے کی موت کے بعد سے ایران کے اعلیٰ حکام میں بے چینی پائی جاتی ہے۔

ایرانی حکام نے دعویٰ کیا ہے کہ فخری زادے کے قتل میں صیہونی ریاست اسرائیل اور جلاوطن اپوزیشن گروپ ملوث ہے جنہوں نے ریموٹ کنٹرول ہتھیار سے حملہ کیا تھا۔

سیکیورٹی کے سربراہ علی شمخانی نے فخری زادے کی تدفین کے موقع پر کہا تھا کہ سرپسندوں نے حملے کےلیے الیکٹرانک آلات کا استعمال کیا، اسی لیے جائے وقوعہ پر حملہ آور موجود نہیں تھے۔

انہوں نے کہا کہ دشمنوں نے محسن فخری زادے کے قتل کےلیے بلکل نیا طریقہ طریقہ استعمال کیا۔

انہوں نے غیرملکی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ایران کی خفیہ اور سکیورٹی ایجنسیوں کو فخری زادہ کے قتل کی سازش کا اندیشہ پہلے سے ہی تھا۔ اس طرح کے حملے کا پہلے سے ہی خدشہ تھا۔

Comments

اپنا تبصرہ بھیجیں