وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے قرنطینہ مراکز کے قریب انسریٹرز لگانےکی ہدایت کردی




وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے قرنطینہ مراکز کے قریب انسریٹرز لگانےکی ہدایت کردی، کرونا وائرس کے علاج کیلئے متعین ڈاکٹرز اور طبی عملے کے زیر استعمال اشیاء کو تلف کیا جائے گا۔

پاکستان میں کرونا وائرس کے مریضوں کی تعداد ایک ہزار سے تجاوز کر گئی جبکہ اب تک 7 افراد جاں بحق ہوچکے ہیں، 10 سے زائد افراد صحت یاب ہوچکے ہیں۔ پنجاب میں کرونا وائرس میں مبتلا مریضوں کی تعداد 300 سے زائد ہوچکی ہے۔ وزیراعلیٰ پنجاب کو یو ای ٹی قرنطینہ میں ییلو روم اور ییلو وین کے بارے میں تفصیل بریفنگ دی گئی۔ عثمان بزدار نے فیصلہ کیا کہ صوبہ کے تمام قرنطینہ سینٹرز کے قریب انسریٹرز لگائے جائیں، جس میں قرنطینہ میں کام کرنیوالے ڈاکٹرز اور طبی عملے کا لباس اور دیگر سامان تلف کیا جائے گا۔وزیراعلیٰ کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ میڈیکل اسٹاف کے زیر استعمال چشمے، جوتے، دستانے، چہرے کے ماسک، کیپ اور حفاظتی لباس ڈیوٹی ختم ہونے کے بعد ییلو روم میں جمع ہوں گی، جہاں سے وزن کرکے سیل شدہ حفاظتی کٹ ییلو وین میں پہنچادی جائے گی۔بریفنگ کے مطابق ییلو وین کے ذریعے سامان انسریٹر میں 1200 ڈگری سینٹی گریڈ پر تلف کردیا جائے گا۔کرونا وائرس سے دنیا بھر میں اب تک تقریباً 20 ہزار افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں، 3 لاکھ سے زائد متاثرین اسپتالوں میں زیر علاج ہے جبکہ ایک لاکھ سے زائد صحتیاب ہوچکے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں