عالمی سطح پر ہلاکتوں کی تعداد37 ہزار کے قریب پہنچ گئی




نیویارک: (31 مارچ 2020) دنیا بھر میں پھیلے کورونا وائرس پر کنٹرول نہ ہوسکا۔ عالمی سطح پر ہلاکتوں کی تعداد سینتیس ہزار کے قریب پہنچ گئی ہے۔ ساڑھے سات لاکھ سے زائد افراد بیمار ہیں۔

گزشتہ روز میں اٹلی میں آٹھ سو بارہ افراد ہلاک ہوگئے جس کے بعد ہلاکتوں کی تعداد ساڑھے گیارہ ہزار سے زائد ہوگئی۔ اسپین میں آٹھ سو سے زائد افراد ہلاک ہوگئے۔ ایران میں ایک سو سترہ افراد دم توڑ گئے۔ امریکا میں دو سو اکہتر افراد ہلاک ہونے کے بعد ملک میں جاری لاک ڈاؤن میں ایک ماہ کی توسیع کردی گئی۔ سعودی عرب کے بادشاہ سلمان بن عبدالعزیز نے حکم دیاکہ بلا رنگ و نسل کے ہر شخص کو مفت مڈیکل کی سہولت فراہم کی جائے۔

برطانوی وزیراعظم بورس جانسن، وزیر صحت، اسکاٹ لینڈ کے وزیر اور چیف میڈیکل افسر کورونا کا شکار ہونے کے بعد بدستور قرنطینہ میں ہیں اور وہ اپنے گھروں سے فرائض انجام دے رہے ہیں۔ حکومت کے چیف میڈیکل ڈاکٹر کا کہنا ہے کہ برطانیہ میں یہ لاک ڈاؤن چھ ماہ تک جاری رہ سکتا ہے۔ برطانوی وزیراعظم کے مشیرکورونا وائرس کی تشخیص کے بعد قرنطینہ میں چلے گئے ہیں۔ ۔۔کورونا وائرس کے باعث بھارت میں لاک ڈاؤن کے باوجود دو افراد ہلاک ہوگئے۔ جس کے بعد ہلاکتوں کی مجموعی تعداد انتیس ہوگئی۔ انگلینڈ میں ایک روز میں ایک سو انسٹھ افراد ہلاک ہوگئے جس کے بعد ہلاکتوں کی تعداد بارہ سو چوراسی ہوگئی۔ برطانوی شہزادہ چارلس سات دن کے بعد قرنطینہ سے باہر آگئے ہیں۔ اسرائیلی وزیراعظم کے مشیر میں کورونا وائرس کی تشخیص کے بعد نیتن یاہو بھی قرنطینہ میں چلےگئے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں