دنیا بھر میں اٹھاسی ہزار 528 افراد کورونا کا شکار بن گئے




نیویارک: (9 اپریل 2020) دنیا بھر میں کورونا وائرس اٹھاسی ہزار پانچ سو اٹھائیس افراد کی زندگیوں کا چراغ گل کرگیا۔ پندرہ لاکھ انیس ہزار سے زائد متاثر۔ تین لاکھ تیس ہزار آٹھ سو چوون افراد صحت یاب۔ امریکا میں مزید چودہ سو افراد موت کی نیند سو گئے۔ اموات کی تعداد دنیا بھر میں اٹلی کے بعد سب سے زیادہ چودہ ہزار سات سو ستانوے کو چھونے لگی۔ اٹلی میں ا ب تک سترہ ہزار چھ سو انہتر افراد کو کورونا وائرس نگل چکا ہے۔

دنیا بھر میں کورونا وائرس خوف اور دہشت کی علامت بن چکا ہے۔ جس سے متاثر ہونے والے افراد کی تعداد پندرہ لاکھ انیس ہزار چھیاسٹھ کو پہنچ گئی جبکہ اموات اٹھاسی ہزار پانچ سو اٹھائیس ہوچکی ہیں۔ اٹلی میں صورتحال جوں کی توں ہے۔ جہاں ایک لاکھ انتالیس ہزار چار سو بائیس افراد اس بیماری سے لڑ رہے ہیں جبکہ ہلاکتیں سترہ ہزار چھ سو انہتر تک پہنچ گئی ہیں۔امریکا میں اب تک چار لاکھ پینتس ہزار ایک سو ساٹھ افراد کورونا سے متاثر ہیں۔ مجموعی طور پر ہلاکتیں چودہ ہزار سات سو ستانوے ہوگئی ہیں۔ امریکی قومی ذخیرہ اسٹریٹجک نیشنل اسٹاک پائل میں طبی سازو سامان لگ بھگ ختم ہوگیا ہے۔ امریکا اور اٹلی کے بعد سب سے زیادہ تباہی اسپین میں کورونا وائرس نے مچائی ہے۔ چودہ ہزار سات سو بانوے شہری کورونا وائرس کا نوالہ بن چکے ہیں جبکہ متاثرین کی تعداد ایک لاکھ اڑتالیس ہزار دو سو بیس رپورٹ ہوئی ہے۔

فرانس میں بھی صورتحال بہتر نہیں ہے۔ جہاں ایک لاکھ بارہ ہزار نو سو پچاس افراد کورونا وائرس کا شکار ہیں جبکہ مرنے و الوں کی تعداد دس ہزار آٹھ سو انہتر بتائی جاتی ہے۔ جرمنی میں اموات دو ہزار تین سو انچاس ہے جبکہ متاثرین ایک لاکھ تیرہ ہزار دو سو چھیانوے ہیں۔ ایران میں چونسٹھ ہزار پانچ سو چھیاسی متاثرین اور ہلاکتیں تین ہزار نو سو ترانوے رپورٹ ہوچکی ہیں۔ برطانیہ میں سات ہزار ستانوے افراد اب تک ہلاک ہوچکے ہیں۔ متاثرین ساٹھ ہزار سات سو تینتس ہیں۔ ترکی میں متاثرین اڑتیس ہزار دو سو چھبیس اور ہلاکتیں آٹھ سو بارہ ہیں۔ بھارت میں کورونا وائرس کے خلاف کیے جانے والے سخت اقدامات کے باوجود یہ مرض پھیلتا جارہا ہے ۔ جہاں مریضوں کی تعداد پانچ ہزار نو سو سولہ اور ہلاکتیں ایک سو اٹھہتر رپورٹ ہوئی ہیں۔ دہلی کے بیس علاقوں کو کورونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے کے لیے سیل کردیا گیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں