انتہا پسند بھارتی ہندوؤں نے مسلمان نوجوان کو تشدد کر کے شہید کر دیا




دہلی: (9 اپریل 2020) انتہا پسند بھارت میں کورونا وائرس کے باوجود متعصبانہ اور وحشیانہ سوچ میں کوئی کمی نہیں آئی۔ مسلمان نوجوان کو ہجوم نے تشدد کر کے شہید کر دیا۔ الزام لگایا کہ وہ کورونا بیماری پھیلا رہا تھا۔

جلادیت سے بھرا یہ واقعہ دہلی کے علاقے باوانا میں پیش آیا۔ جہاں تبلیغی جماعت سے آنے والے بائیس برس کے محبوب علی جو گھر میں قرنطینہ میں تھا۔ اسے مکان سے نکال کرانتہا پسند بھارتی ہندوؤں نے بیچ چوراہے پر لا کر بد ترین تشدد کا نشانہ بنایا۔ محبوب علی پر انتہا پسندوں اور بے رحم بلوائیوں نے الزام لگایا کہ وہ کورونا وائرس پھیلانے کا باعث بن رہا ہے۔ بھارتی مسلمان چیخ چیخ کر یہ دہائی دیتا رہا کہ اس نے ٹیسٹ کروایا ہے لیکن وہ منفی آیا ہے لیکن اس کے باوجود دہشت گرد بھارتی انتہا پسندوں نے لاٹھیاں اور اینٹیں مار مار کر اس کو شہید کر دیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں