اگر ایران میں تین ماہ تک لاک ڈاون نہ کیاگیا توکورونا ختم نہیں ہوگا، ایرانی رکن پارلیمنٹ




تہران: (14 اپریل 2020) ایران میں کوروناوائرس کی بگڑتی صورت حال پرایرانی رکن پارلیمنٹ کا کہنا ہے کہ اگر ایران میں تین ماہ تک لاک ڈاون نہ کیاگیا توکورونا ختم نہیں ہوگا۔

رکن پارلیمنٹ نے خبردار کرتے ہوئےبھی کہا ہے کہ اگر وبا اسی شدت کے سےجاری رہی تو روزانہ ہلاکتوں کی تعداد دو ہزار تک پہنچ سکتی ہے۔

خبررساں ایجنسی کے مطابق ایرانی پارلیمنٹ کی سماجی کمیٹی کے سربراہ عبدالرضا عزیزی کہتے ہیں کہ ایران میں کورونا وائرس پر قابو پانے کے لیے ہمیں مسلسل تین ماہ تک لاک ڈائون کرنا ہوگا۔ اگر ایسا نہ کیا گیا تو کورونا ایران میں ایک مستقل بیماری بن جائے گی۔

ایران میں متاثرین کی تعداد تہتر ہزار سے زائد اور ہلاکتیں ساڑھے چار ہزار سے زائد ہوچکی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں