دنیا بھر میں کورونا وائرس نے ایک لاکھ پینتالیس ہزار سے زائد افراد کی جان لے لی




نیویارک: (17 اپریل 2020) دنیا بھر میں کورونا وائرس ایک لاکھ پینتالیس ہزار پانچ سو اکیاون افراد کی زندگی کا چراغ گل کرگیا۔ متاثرین کی تعداد اکیس لاکھ بیاسی ہزار آٹھ سو تئیس تک جا پہنچی۔ پانچ لاکھ سینتالیس ہزار چھ سو اناسی افراد کورونا کو شکست دینے میں کامیاب ہوئے۔

امریکا میں ایک اور ہلاکت خیز دن۔امریکا میں مجموعی طور پر چھ لاکھ اٹہتر ہزار ایک سو چوالیس افراد متاثرہیں جبکہ ہلاک ہونے والوں کی تعداد دنیا بھر میں سب سے زیادہ چونتیس ہزار چھ سو اکتالیس تک جاپہنچی۔ صدر ٹرمپ کی معیشت کو دوبارہ کھولنےکیلئے تین مراحل کی تجویز کا اعلان۔گورنرز کو ارسال کردہ دستاویز میں کوئی ٹائم ٹیبل نہیں دیا گیا۔ امریکا کے بعد سب سے زیادہ متاثر ہونے والا ملک اٹلی ہے جہاں ایک لاکھ اڑسٹھ ہزار نو سو اکتالیس افراد کورونا کے مریض ہیں جبکہ ہلاک ہونے والوں کی تعداد بائیس ہزار ایک سو ستر رپورٹ ہوئی۔ اسپین میں مجموعی طور پر انیس ہزار تین سو پندرہ افراد کورونا کی وجہ سے ہلاک ہوئے ہیں جبکہ ایک لاکھ چوراسی ہزار نو سو اڑتالیس افراد کورونا سے متاثر ہیں۔ فرانس میں بھی صورتحال میں کوئی بہتری نہیں آئی جہاں ایک لاکھ پینسٹھ ہزار ستائیس افراد کورونا کا شکار ہیں اور اموات سترہ ہزار نو سو بیس بتائی جاتی ہیں۔

برطانیہ میں مزید آٹھ سو اکسٹھ افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔ لاک ڈاؤن میں تین ہفتوں کی توسیع کر دی گئی ہے۔ برطانیہ میں مجموعی طور پر تیرہ ہزار سات سو انتیس افراد ہلاک ہوچکے ہیں اور ایک لاکھ تین ہزار ترانوے افراد کورونا کے مریض بن چکے ہیں۔ جرمنی میں چار ہزار باون، بیلجئیم میں چار ہزار آٹھ سو ستاون، کینیڈا میں ایک ہزار ایک سو پچیانوے، روس میں دو سو بتیس، جنوبی کوریا میں دو سو تیس اور جاپان میں ایک سو نوے اموات ریکارڈ کی جاچکی ہیں۔ بھارت میں تیرہ ہزار چار سو تیس افراد کورونا کا شکار ہوچکے ہیں اور ہلاک ہونے والوں کی تعداد چار سو اڑتالیس بتائی جاتی ہے۔

ایران میں سستر ہزار نو سو پچیانوے متاثرین ہیں اور مرنے والوں کی تعداد چار ہزار آٹھ سو انہتر رپورٹ ہوئی ہے۔ ترکی میں چوہتر ہزار ایک سو ترانوے متاثرین اور ہلاکتیں ایک ہزار چھ سو تینالیس رپورٹ ہوئیں۔ اسی طرح سعودی عرب میں چھ ہزار تین سو اسی متاثرین ہیں اور جان سے جانے والوں میں تراسی افراد شامل ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں