آئی ایم ایف اور عالمی بینک سے غریب ممالک کے قرضے منسوخ کرنے کا مطالبہ




نیوز ڈیسک: (14 مئی 2020) دنیا بھر کے سو سے زائد قانون دانوں اور معاشی ماہرین نے بین الاقوامی مالیاتی فنڈز اور عالمی بینک سے مطالبہ کیا ہے کہ کورونا وائرس کے پیش نظر وہ غریب ممالک کا قرضہ منسوخ کرنے کے ساتھ ساتھ ان ممالک کی امداد میں اضافہ کریں۔

ان قانون دانوں کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کی وبا نے ترقی پذیر اور پسماندہ ممالک کی معیشت کو تباہی سے دوچار کردیا ہے۔ مسائل کا انبار لگ گیا ہے۔ صنعتیں بند ہیں۔ کاروبار کا پہیہ جام ہوگیا ہے۔ بے روزگاری کا سیلاب بڑھ رہا ہے۔ اس معاشی بحران کے باوجود ان ممالک کو بین الاقوامی مالیاتی فنڈز اور عالمی بینک کے قرضے سود سمیت واپس کرنے ہیں۔ اسی لیے بہتر تو یہ ہوگا کہ قرضے فوری طور پر منسوخ کیے جائیں جبکہ ان غریب ممالک کو سہارا دینے کے لیے مالی امداد میں اضافہ کیا جائے۔ یہ مطالبہ امریکی صدر اور دیگر عالمی رہنماؤں سے بھی کیا گیا ہے۔ جن سے کہا گیا ہے مشکل کی اس گھڑی میں ان ممالک کی مدد کرنے کے لیے آگے آئیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں