مقبوضہ کشمیر میں شہید جنید اور طارق کی غائبانہ نماز جنازہ ادا




سری نگر: (20 مئی 2020) مقبوضہ کشمیر میں شہید جنید اور طارق کی غائبانہ نماز جنازہ ادا کی گئی۔ جبکہ حریت کانفنرس نے اسلام آباد میں اقوام متحدہ کے دفتر کے سامنے کشمیریوں کی نسل کشی کے خلاف احتجاج  کیا اور میر واعظ مولوی فاروق و خواجہ لون کو خراج عقیدت پیش کیا۔

حریت رہنما محمد اشرف صحرائی کےبیٹے جنید صحرائی اوراس کے ساتھی طارق کو بھارتی فوج نے منگل کے روز سری نگر میں آپریشن کے دوران گولی مار کر شہید کردیا تھا۔ قابض فوج نے متعدد گھر بھی مسمار کردیئے۔

 حریت کانفرنس کی اپیل پر مقبوضہ کشمیرمیں مظاہرے کیے گئے اور بھارتی فوج کے آپریشن میں نہتے شہریوں کو قتل کی مذمت کی گئی۔

حریت رہنماؤں نے اسلام آباد میں اقوام متحدہ کے دفتر کے سامنے احتجاج کیا اور میر واعظ مولوی فاروق اور خواجہ لون اور جنید صحرائی سمت دیگر شہدا کو خراج عقیدت پیش کیا۔

 اکیس مئی 1990ء کو نامعلوم افراد نے گھر پر فائرنگ کر کے میر واعظ مولوی محمد فاروق کو شہید کردیا تھا اور اسی روز جنازے پر نامعلوم افراد نے فائرنگ کر کے 70 کشمیریوں کو شہید کردیا تھا۔

اسی روز 21 مئی 1970ء کو نامعلوم افراد نے فائرنگ کر کے خواجہ عبدالغنی کو شہید کردیا تھا۔ خواجہ لون عید نماز کا خطبہ دے کر واپس  گھر آرہے تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں