امریکا میں سیاہ فام کے قتل کیخلاف شہرشہر مظاہرے شدت اختیار کرگئے




واشنگٹن: (05 جون 2020) امریکا میں سیاہ فام کے قتل کیخلاف شہرشہر مظاہرے شدت اختیار کرگئے۔10ہزار مشتعل مظاہرین کو گرفتار کیا جاچکا ہے۔ڈیموکریٹک اراکین نے گھٹنے ٹیک کر جارج فلائیڈ کو خراج عقیدت پیش کیا۔میناپولس میں جارج فلائیڈ کی آخری رسومات کی ادا کردیں گئیں۔مظاہروں کے دوران لوٹ مار کی وارداتوں میں بے حد اضافہ ہوگیا۔ شکاگو میں چلتی مال گاڑی سے مشتعل افراد نے ٹی وی اور دیگر الیکڑونک سامان لوٹ لیا۔

امریکا بھر میں سفید فام پولیس کے ہاتھوں قتل ہونے والےسیاہ فام شہری کے قتل کخیلاف مظاہروں کا سلسلہ دسویں روز بھی جاری ہے۔ سیاہ فام کے قتل میں ملوث تین پولیس اہلکار ضمانت پر رہا ہوگئے ۔مرکزی ملزم کی ضمانت دس لاکھ ڈالرز میں منظور ہوئی۔ امریکی جرنیلز نے صدر ٹرمپ کے کہنے پر فوج کو مظاہرین کے خلاف استعمال کرنے سے انکار کے بعد امریکی صدر ٹرمپ اپنے موقف سے پیچھے ہٹ گئے اور واشنگٹن میں تعینات فوجی واپس شمالی کیرولائنا بھیج دیے گئے۔

دوسری جانب مختلف شہروں میں پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپیں جاری ہیں۔ پولیس نےمنتشرکرنے کیلئے مظاہرین پر آنسو گیس اور لاٹھی چارج کا استعمال کرکے متعدد کو زخمی کردیا۔ مظاہروں کے دوران شکاگو میں چلتی مال گاڑی سے مشتعل افراد نے ٹی وی اور دیگر الیکڑونک سامان لوٹ کر لے گئے جبکہ مختلف شہروں میں متعدد سپر اسٹور اور زیورات کی دکانوں کو بھی سامان سے خالی کردیا۔

لوٹ مار روکنے کیلئے نیشنل گارڈ تعینات کر دئیے گئے اور اہم عمارتوں کی سیکیورٹی فوج کے حوالے کر دی گئی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں