Home » درد کا بٹن – جاوید اختر آرائیں
صحت

درد کا بٹن – جاوید اختر آرائیں

سوال : السلام علیکم مجھے بہت چکر آتے ہے ٹانگیں تھک جاتی ہے۔ جب نماز پڑھتی ہو تو رکوع میں ایسا محسوس ہوتا ہے جیسے زمین ہل رہی ہے . چل پھر کر کام کر لیتی ہو لیکن ایک جگہ پر زیادہ دیر کھڑا ہونا پڑے تو ایسا لگتا ہے جیسے پریشانی ہوتی ہے جیسے پورے جسم میں سنسناہٹ ہو رہی ہے۔ دل پریشان ہوتا ہے، زمین ہلتی محسوس ہوتی ہے کچھ سمجھ نہیں آتا کہ سب کیوں ہو رہا ہے رات سو کر صبح اٹھتی ہو تو کمر اور پسلیاں اکڑی ہوتی ہے . اتنی درد ہوتی ہے کہ اٹھنا مشکل ہوتا ہے پھر آہستہ آہستہ کام کاج میں ٹھیک ہو جاتا ہے۔


وعلیکم السلام و رحمة اللہ وبرکاتہ . آپ کے سب مسائل کا حل ہے , ان شاء اللہ خیر ہو گی کرم ہوگا بس ایک وعدہ کر لیں اپنے ساتھ آپ نے دن میں پانچ بار ہر نماز کے بعد پندرہ منٹ اپنے لئے نکالنے ہیں اور اس دوران کاٹن کا سوتی سفید صاف رومال خالص عرق گلاب میں بھگو کر نچوڑ کر اپنی آنکھوں پر رکھ کر اسی جائے نماز پر لیٹ جانا ہے اس دوران دونوں ہاتھوں میں انگوٹھے اور پہلی انگلی کے درمیان اس پریشر پوائنٹ پرجسے درد کا بٹن کہنا چاہیئے دوسرے ہاتھ کے انگوٹھے سے تین دو، دو منٹ درمیانہ دباؤ ڈال کر سرکل میں گھمانا ہے , اور اس دوران گہرے سانس لینا بیحد ضروری ہے , اور یہ تصور کرنا ہے کہ ہر سانس کے ساتھ صحت آپ کے جسم میں داخل ہورہی ہے اور درد، تکلیف، کمزوری، تھکن بیماری، پریشانی، مایوسی، اداسی، غم سمیت سارے منفی خیالات سوچیں آپ کے پیروں کے راستے نکل کر زمین میں جذب ہو رہی ہیں ان شاء اللہ پہلے سیشن سےاس کے نتائج نظر آنے لگیں گے ,

اور ایک ہفتے میں ناقابل یقین طورپورا جسم مثبت توانائی سے بھر جائے گا اور جب ایسا ہو جائے تواس انرجی کو اپنے آس پاس ہر بیمار، مایوسی کا شکار فرد تک منتقل کیجئے گا جب آپ دکھی انسانوں کے دکھ درد دور کرنے کی کوشش کریں گے ان شاء اللہ آپ ہمیشہ سکھی رہیں گے خوش رہیں اور خوشیاں بانٹیںنوٹ : جسم میں کہیں بھی درد ہو ,اس پوائنٹ کو دبانے سے ان شاء اللہ کم ہوجائے گا. ۔۔،دوران حمل کوئی بھی تھیراپی اپنے معالج کی اجازت کے بغیر نہ کی جائے.

Tags

Add Comment

Click here to post a comment