اسکول اور حفاظتی اقدامات – ہمایوں مجاہد تارڑ




بہت سے والدین تذبذب کا شکار ہیں کہ آیا بچوں کو سکول بھیجا جائے یا نہیں ۔ کینیڈا ، انگلینڈ ، آسٹریلیا وغیرہ سے موصول ہوئی تازہ خبروں کے مطابق ، آن گراؤنڈ سکولنگ میں رِسک ہے ۔ بعض مقامات پر کووِڈ 19 کیسز اُبھرنے کی صورت سکولز بند کیے گئے ہیں ، بعض دوسری جگہوں پر دو روز کی وقتی بندش کا اہتمام کیا جاتا ہے تاکہ ڈِیپ کلیننگ کی جا سکے ۔

بہت سے مقامات پر آپشن دے دیا گیا ہے کہ چاہیں تو آن گراؤنڈ سکولنگ کے لیے بچوں کو بھیجتے رہیں ، چاہیں تو آن لائن آپشن پر ہی رہیں ۔ جو لوگ آن لائن آپشن پر رہنے کے قائل ہیں ، انہیں چاہیے کہ گھر میں اور گھر سے باہر بچوں کے لئے فزیکل ایکٹیویٹی کا اہتمام کرتے رہیں ، جیسے بیڈ منٹن وغیرہ ۔ تاکہ سکرین والی پڑھائی سے فارغ ہو کر بچے دوبارہ سکرین سے ہی نہ چمٹے رہیں ……… ویڈیو گیمز کی صورت ۔ جو لوگ بچوں کو سکول بھیج رہے ہیں ، اُن کے لیے دو ٹِپس :
1- بچوں کو احتیاطی تدابیر سنائیں نہیں، وہ ایک کان سے سن کر دوسرے سے نکال دیں گے۔ بچّے آخر بچّے ہوتے ہیں۔ بلکہ خود اُن سے پوچھیں …….. سکول پہنچ کر آپ کن کن باتوں کا خیال رکھیں گے؟
2- اُمید کرتا ہوں بچوں کو یہ تین دُعائیں یاد کروا دی ہوں گی: بِسْمِ اللہِ تَوَکَّلْتُ عَلَی اللہِ وَلاَ حَوْلَ وَلاَ قُوَّۃَ اِلاَّ بِاللہ ۔
میں اللہ کا مبارک نام لے کر اور اس پر بھروسا کر کے گھر سے نکلا — کہ اللہ کی مدد کے بغیر کوئی کوشش اور کوئی قوت کارگر نہیں۔
بِسْمِ اللهِ الَّذِي لاَ يَضُرُّ مَعَ اسْمِهِ شَيْءٌ فِي الأَرْضِ وَلاَ فِي السَّمَاءِ، وَهُوَ السَّمِيعُ العَلِيمُ۔
أَعُوذُ بِكَلِمَاتِ اللّہِ التَّامَّةِ مِنْ شَرِّ مَا خَلَقَ۔

بچے گھر سے رخصت ہوں تو ایک بار یہ دعائیں سُن سُنا لیا کریں ۔۔۔ یہ کہہ کر کہ پہلے میں پڑھوں گا/گی، پھر آپ۔ یا پہلے آپ پڑھیں گے، پھر میں۔ گھر اندر رہ کر بھی دن کا آغاز اِن تین دعاؤں سے ہونا چاہیے۔ شاد آباد رہیں۔ ⁦

اپنا تبصرہ بھیجیں