بیوی کو عزت و محبت دینا ۔۔۔۔!




کہتے ہیں کہ شادی کے بعد عورت کا چہرہ اور جسمانی حالت بتاتی ہے کہ اُس کے شوہر نے اُسے کس حال میں رکھا ہوا ہے۔ وہ عورتیں کبھی بوڑھی نہیں ہوتیں جن کے شوہر اُن پر جان چھڑکتے ہیں۔ شادی سے قبل لڑکی مناسب شکل صورت کی ہوتی ہے جو پہن اُوڑھ کر اچھا لگتی ہے۔

مگر شادی کے بعد شوہر کی توجہ، محبت اور عزت عورت کے چہرے کو ایسا نکھارتی ہے… کہ وہ مزید خوبصورت ہوتی چلی جاتی ہے۔ شادی کے دس بیس سال بیت جانے کے بعد بھی عورت خوبصورت اور کم عمر لگ سکتی ہے کہ دیکھنے والے دنگ رہ جائیں اور زوجین کی قسمت پر رشک کرتے نہ تھکیں۔ لوگ ہمیشہ عورت کو الزام دیتے ہیں کہ وہ اپنا خیال نہیں رکھتی جس کا شوہر ہی اُسے عزت و اہمیت نہ دیتا ہو تو وہ بھلا کس کے لیے سجے سنورے۔کہتے ہیں کہ عورت کو تم جیسا کہو گے وہ ویسی ہی بنتی چلی جائے گی، اُسے بدصورت اور پھوہڑ کہو گے تو وہی بنتی جائے گی اور اگر اُسے خوبصورت اور سلیقہ مند کہو گے تو وہ خود بہ خود ویسی ہی بنتی چلی جائے گی۔

رسول کریم ؐ نے فرماتے ہیں:
” نیک اور بلند مرتبہ لوگ اپنی بیویوں کی عزت کرتے ہیں اور پست ذہنیت اور نیچ لوگ اُن کی توہین کرتے ہیں۔“

رسول کریم ؐ نے فرماتے ہیں:
” تم میں سب سے بہتر شخص وہ ہے جو اپنی عورت کے ساتھ سب سے بہتر سلوک کرے۔“

حضرت امام زین العابدین ؑ نے فرماتے ہیں:
” تم پر عورت کا یہ حق ہے کہ اُس کے ساتھ مہربانی سے پیش آؤ کیونکہ وہ تمھاری دست نگر ہے، اُس کے کھانے پینے کا، کپڑے کا انتظام کرو اور اُس کی نادانیوں کو معاف کردو۔“

ڈاکٹر علی شریعتی کہتے ہیں کہ ۔۔۔۔
ﻋﻮﺭﺕ ﺍگر ﭘﺭﻧﺪﮮ ﮐﯽ ﺻﻮﺭﺕ میں ﺧﻠﻖ ہوتی ﺗﻮ ﺿﺮﻭﺭ ”ﻣﻮﺭ“ ہوتی۔ ﺍگر چوپائے ﮐﯽ ﺻﻮﺭﺕ میں ﺧﻠﻖ ﮐﯽ ﺟﺎتی ﺗﻮ ﺿﺮﻭﺭ ”ہرﻥ“ ہوتی۔ ﺍگر ﮐﯿﮍﮮ مکوﮌﮮ ﮐﯽ ﺻﻮﺭﺕ میں ﺧﻠﻖ ﮐﯽ ﺟﺎتی ﺗﻮ ﺿﺮﻭﺭ ”تتلی“ ہوتی۔ لیکن ﻭﮦ ﺍﻧﺴﺎﻥ ﺧﻠﻖ ہوئی ﺗﺎﮐﮧ ﻣﺎﮞ، بہن ﺍﻭﺭ ﻋﺸﻖ(بیوی) بنے۔۔۔

ﻋﻮﺭﺕ ﺍتنی بڑی ہے۔ ﺍﺷرف ﺍﻟﻤﺨﻠﻮﻗﺎﺕ ﺧﺪﺍ میں سے ہے۔۔۔۔ ﺍِﺱ ﺣﺪ تک ﻧﺎﺯک مزاج کہ ایک پھوﻝ ﺍُسے ﺭﺍضی ﺍﻭﺭ ﺧﻮﺵ ﮐﺭ دیتا ہے ۔۔ ﺍﻭﺭ ﺍِﮎ ﻟﻔﻆ ﺍُسے ﻣﺎﺭ ﺩیتا ہے۔!ﺗﻮ ﺑﺲ ﺍﮮ ﻣﺮدوں خیاﻝ ﺭکھو ﻋﻮﺭﺕ تمھاﺭے دل کے ﻧﺰدیک ﺑﻨﺎئی گئی ہے ﺗﺎکہ ﺗﻢ ﺍپنے دل میں ﺍُس کو جگہ ﺩﻭ۔
تعجب ﺁﻭﺭہے کہ ﻋﻮﺭﺕ ﺍپنے بچپن میں اپنے ﺑﺎپ کے لیے ﺑﺮکت ﮐے دروازے ﮐھﻮلتی ہے ۔ ﺍﭘﻨﯽ ﺟﻮﺍنی ﻣیں ﺍپنے ﺷﻮہر کا ایمان کاﻣﻞ کرتی ہےﺍﻭﺭ ﺟﺐ ﻣﺎﮞ بنتی ہے ﺗﻮ ﺟﻨﺖ ﺍﺱ کے ﻗﺪﻣﻮﮞ تلے ہوﺗﯽ ہے۔ ﻋﻮﺭﺕ ﮐﯽ ﻗﺪﺭ کرﻭ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں