اللہ کے مددگار – عالیہ زاہد بھٹی




علماء کرام کی باہمی مشاورت سے ہی طے کیا گیا ہے کہ نہ تو مساجد بند ہوں گی اور نہ ہی ویران ہوں گی ………بس وہاں جتنے افراد موجود ہوں گے امام ، پیش امام اور خدّام وہ سب ان مساجد میں جماعت کا اہتمام کریں گے
باقی رہا فجر کی نماز جماعت سے پڑھنے والے کا اللہ ضامن ہے ……..تو پیاری بہنوں اس دور پر فتن کی وباء میں گھروں کو مسجد بنا لیجئے..! بجائے اس کے کہ ہم ایک مکتبہ فکر کے علماء کرام کی حمایت اور دوسرے کی مخالفت شروع کر کے ایک نئی بحث شروع کر دیں اس سے بہتر ہے کہ ہم اپنے ان گھر والوں اور والیوں پر توجہ دیں کہ جو عام حالات میں نماز باجماعت نہیں پڑھتے تھے یا نہیں پڑھ سکتے تھے ان تمام افراد کو ساتھ ملا کر گھروں میں پانچ وقت فرض نمازوں کا باجماعت اہتمام کریں اور استغفار کے ساتھ تمام گھر والوں کو تہجد کے لئے بھی تیار کریں ……….یہ فرصت کا ملنا بہت قیمتی ہے. ان لمحوں میں وہ سب کر لیجئے جو کبھی کہا کرتے تھے کہ “کاش میرے پاس اور ان گھر والوں کے پاس وقت ہوتا تو ان کو دین سکھاتے”
بہنوں بہت فراوانی سے وقت ملا ہے……. اسے ان مباحث میں ضائع مت کریں کہ اس عالم کا یہ فتوی ہے کہ یاد رکھیں قرآن کریم کا صرف ایک ہی فتوی ہے کہ “داخل ہو جاؤ پورے کے پورے اسلام میں ” اور “اللہ کا رنگ اختیار کرو……اس کے رنگ سے اچھا اور کس کا رنگ ہے؟؟؟؟” اللہ کا واسطہ ، اپنی فرصت کے لمحات میں گھروں میں باجماعت نمازوں کا اہتمام کریں ، خواہ آپ گھر میں دو افراد ہی کیوں نہ ہوں ، ایک امام دوسرا مقتدی…….اور جو دو سے زیادہ افراد ہیں وہ اس طرح کہ سب سے آگے نماز کی امامت کرانے والا فرد بہ حیثیت امام ..، دوسری لائن گھر میں موجود مرد لڑکے اور بچے …، تیسری لائن گھر میں موجود عورتیں، لڑکیاں، اور بچیاں…
اللہ پاک اس دور پر فتن کے اس وبائ فتنے کو ہماری گھروں میں ہونے والی باجماعت نمازوں کی ادائیگی کے ذریعے شکست سے دوچار کردے ……..اس صورتحال سے مایوس مت ہوں بلکہ اس سے امید کی کرن کو روشنی کے سورج میں بدل دیں . وہ نیا ابھرتا سورج مجھے اور آپ کو اپنی تابناکی سے یقین دلا رہا ہے کہ اس وباء سے پہلے مساجد میں نمازی بہت کم تھے وجہ کچھ بھی ہو مگر اب اس وباء کے بعد مجھے اور آپ کو اپنے گھر کا ایک ایک فرد نماز باجماعت کے لئے تیار کرنا ہے ……سوچیں اللہ پاک نے اپنے ساتھیوں کو نماز سے مدد لینے کے لئے تربیت کا موقع عطا فرمایا ہے……دجالی میدان سج رہا ہے اس میں اللہ پاک کے مدد گاروں کی ضرورت ہے …… اپنے گھروں میں اس فرصت کے دور میں اللہ کے مددگار بننے اور بنانے کی تیاری کیجئے اور فتنوں اور مباحث سے اپنے دامن بچا کر کہہ دیجئے کہ
“نحن انصار اللہ”ہم ہیں اللہ کے مددگار.

اپنا تبصرہ بھیجیں