اور تمہارا رب بھولا نہیں ہے – بنت شیروانی




آج گھروں میں بند ہونے پر واقعہ کربلا کی یاد تازہ ہوئی اور رب کا شکر ادا کیا کہ الحمدللہ ہمارے پاس کھانے پینے کا سامان ابھی موجود ہے….. پر کیا بھروسہ کل کیا ہو! جو ظلم اقوام نے ان مظلوموں پر ڈہائے اور جو شرمناک خاموشی تمام اقوام نے اختیار کی….. اسکے بعد اب بھی زندگی کو تنگ کئے رکھا ہے تو پھر رب نے کہا ہے کہ و ما كان ربك نسيًّا ،اور مظلوم کے لئے بڑا سھارا ہے.!
آج کے کرفیو میں ……… کشمیر میں محصور کشمیریوں درندے فوجی گھس آئیں اور قتل و غارت گری شروع کردیں اور پاکستانی قوم انڈین فلموں اور گانوں میں غرق، واٹس اپ میسج آگے بڑھا کے نیا گانا لگا دے گی! و ما كان ربك نسيًّا………آج فلسطین کے مسلمان بھی یاد آۓ …….جنھیں قبلہ اول بیت المقدس کو آزاد کرانے کی کوششوں میں محصور کر دیا جاتا ہے اور اپنے ہی گھر میں گھس کر مار دیا جاتا ہے! آج لگتا ہے کہ انسانیت کو ویٹو کرنے والا امریکہ اور اسکے سب حواری اپنی باری کے منظر ہیں اور مجبور ہیں کہ لاشیں اٹھائیں بے حساب! و ما كان ربك نسيًّا………آج آنے والے رمضان کو سوچ کر چائنہ کے مسلمان بھی یاد آۓ ……جن کا زبردستی روزہ بھی تڑوادیا جاتا تھا…..
اے میرے کشمیریوں…. اور فلسطینیوں اور دنیا میں جہاں بھی مسلمان قید و بند کی صروبتیں برداشت کر رہے ہیں!……. ابھی اک جھٹکا لگا کر رب نے کہا ہے، و ما كان ربك نسيًّااے میانمار والوں! ہم نہ رات کو جاگے تمہارے لئے دعا کرنے….. نہ توبہ کی اپنی حرکتوں سے!مگن رہے اپنے میں مست اور تم کچلتے چلے گئے!……..ہم تم سب سے شرمندہ ہیں اور دعا کر رہے ہیں کہ دنیا میں اس آنے والی وبا سے ہی دنیا میں موجود تمام قید و بند کی صعوبتوں کو برداشت کرنے والے سارے انسانوں اور خاص کر مسلمانوں کو رہائی نصیب ہو جاۓ کیونکہ و ما كان ربك نسيًّا……..!
اللھم لا تقتلنا بغضبک ولا تھلکنا بعذابک وعافنا قبل ذلک

اپنا تبصرہ بھیجیں