بچے من کے سچے۔۔۔۔ – فرحین خان




کچھ دن پہلے ہمارے کھر ایک نئی بلی روز آرہی تھی ۔۔۔۔۔۔ ہم بہت پریشان تھےکہ کیوں آرہی ہے ۔۔؟
ہم نے ہر جگہ دیکھا کہ کہیں کوئی چوہا تو نہیں ہے ۔۔۔۔۔۔ لیکن کچھ معلوم نہ ہو سکا ۔ ہم اسے جتنا بھگاتے اتنا ہی وہ پھر آجاتی ۔۔۔ایک دن ہمیں ہلکی ہلکی میاوں میاوں سنائی دی ۔ دیکھا تو صحن میں ایک پرانی ٹیبل کے نیچے سے دو چھوٹے چھوٹے منہ نظر آگئے ۔۔۔۔۔۔۔بس اب بلی کے بار بار آنے کی وجہ سامنے تھی ۔ بہت دل چاہا کہ ان پیارے پیارے بلی کے بچوں کو گود میں لیں ۔۔۔۔ جاکے پکڑ لیں لیکن ان کی مما کی وجہ سے ہم ڈرتے تھے کہ وہ ہر وقت ان دونوں بچوں کے پاس پہرا دے رہی ہوتی تھی ۔۔۔۔۔
وہ دونوں جب صحن میں کھیلتے کودتے شور مچاتے ۔۔۔ لیکن جب ہم باہر آتے تو فوراً چھپ جاتے ۔۔۔ وہ بہت ہی پیارے اور معصوم سے تھے ہماری ان سے دوستی بھی ہوگئی ۔۔۔۔۔۔ کیونکہ بچے جیسے بھی ہوں اور جس کے بھی ہوں بہت ہی پیارے ہوتے ہیں اور ان کا شور ایک الگ ہی لطف دیتا ہے ۔۔لیکن جانوروں کے خاص طور پر بلی اور مرغی اور چڑیا کے بہت ہی زیادہ ۔۔۔۔۔ شور سے ہاد آیا کہ ہمارے گھر میں الیکٹرک سوئچ کے بورڈ کے اوپر ایک باکس سا تھا ۔۔۔۔ کچھ دن تک ایک چڑا اور ایک چڑیا آتے اور وہاں تنکے رکھ کر چلے جاتے ۔۔۔۔۔.
ابھی کچھ دن پہلے ہیہمیں چوں چوں کی آوازیں آنح لگیں اور باکس سے ۔۔۔۔۔بہت ہی پیاری سی چھوٹی سی ۔۔۔۔ شاید وہاں انہوں نے انڈے دیے تھے اور وہ آواز ان کے بچوں کی تھی ۔۔۔۔۔ اب ہمیں انتظار ہے کہ کب وہ بڑے ہو کر باہر آتے ہیں اور ہم انہیں دیکھ سکیں ۔۔۔۔۔!

بچے من کے سچے۔۔۔۔ – فرحین خان” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں