آتا ہے یاد مجھ کو اسکول کا زمانہ۔۔۔۔! – فرحین خان




ستائیس فروری کی صبح تھی۔۔۔۔۔ مما ہمیں اسکول کے لیے اٹھا رہیں تھیں اور ہم چھٹی کے لیے بہانے بنارہے تھے کہ اتنی دیر میں ہماری پھپھو کی کال آگئی۔۔۔۔۔۔انہوں نے بتایا کہ آج اسکول کی چھٹی ہے ، کورونا کی وجہ سے دو دن کی۔۔۔!
ٹی وی کھولا تو یہی ہیڈلائنز آرہی تھین ۔۔۔۔ اب تو ہماری خوشی کا ٹھکانا نہ رہا پھر ہم نے جلدی سے اپنا اسکول کا سامان اندر رکھا ۔ کیلنڈر پر نظر پڑی تو دیکھا کہ ان چھٹیوں کے بعد تو ہفتہ اتوار ہے۔۔۔۔۔۔! یعنی کے مزید دو چھٹیاں ۔۔۔۔واہ جی ! اب تو ہماری اور زیادہ چاندنی ہو گئی تھی ۔ لیکن ایک مسلہ تھا ۔۔اور وہ یہ کے پھر ہمارے پیپرز تھے ۔۔۔۔! تیاری کرنی تھی۔ ایسے میں مما نے کھیلنے نہیں دینا تھا سو ہم اپنی تیاری کرنے بیٹھ گئے. تیاریاں چل رہی تھیں کہ سندھ گورمنٹ نے اعلان کردیا کے کہ پیپرزڈلے۔۔۔۔۔۔! ابھی مما کہتی تھیں کہ پیپرز کی تیاری کرو۔۔۔۔ لیکن اب تو ایسی چھٹیاں بڑھیں کہ اب گھر میں بس کام ہی کام کہ یہ کرو نا وہ کرو نا ۔۔۔۔۔! اسیے میں تو
آتا ہے یاد مجھ کو اسکول کا زمانہ
وہ صبح دیر کرنا مما سے ڈانٹ کھانا
پہلی سیٹ کے لیےوہ وین میں شور مچانا
وہ کولیڈور میں بھاگنا پھر ٹیچر سے مار کھانا
وہ سزا کے دوران پٹ پٹ کر مسکرانا
آتا ہے یاد مجھ کو اسکول کازمانہ
جب سے ہماری دعا ہے کہ یہ وائرس جلد از جلد ختم ہو اور ہمارا اسکول دوبارہ شروع ہو ۔۔۔۔۔۔۔اللہ تعالیٰ ہماری دعاوق کو قبول فرمائے کیونکہ یہ سب بچوں کی دعا ہے۔۔۔۔!

اپنا تبصرہ بھیجیں